ویمن یونیورسٹی ملتان میں فن پاروں کی نمائش شروع

ویمن یونیورسٹی ملتان میں فن پاروں کی نمائش شروع

  

 ملتان ( سٹی رپورٹر)  صادقین فاونڈیشن امریکا اور شعبہ اوراک ویمن یونیورسٹی ملتان کے زیر اہتمام پاکستان کی پہچان صادقین  کو خراج تحسین پیش کرنے کیلئے فن پاروں کی نمائش اور کتاب کی رونمائی کی گئی ڈاکٹر سلمان احمد کی ”فرام کے دی صادقین“ کی افتتاحی(بقیہ نمبر28صفحہ6پر)

 قریب سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر عظمیٰ قریشی نے کہا کہ عالمی شہرت یافتہ مصور، خطاط اور شاعر صادقین کا شمار پاکستان کی چندان شخصیات میں ہوتا ہے جن کا نام اور کام صدیوں تک زندہ رہے گا۔ آرٹ اور ادب کے شعبے میں ان کی خدمات قابل تحسین ہیں۔ وہ دنیا کے بہترین آرٹسٹ تھے۔ انہوں نے اپنی کوئی پینٹنگ فروخت نہیں کی۔ اپنی زندگی میں انہوں نے پندرہ ہزار سے زائد فن پارے تخلیق کئے اور تمام کے تمام فن پارے لوگوں کو تحفے میں دے دیئے۔ انہوں نے انتہائی سادہ زندگی گزاری تھی 1987ئمیں جب ان کا انتقال ہوا تو ان کے پاس کچھ نہیں تھا اور وہ یہی چاہتے تھے صادقین کی شخصیت کا ایک نمایاں پہلو ان کا میورل آرٹ ہے۔ ڈاکٹر عظمی قریشی نے کہا کہ آرٹ کیسی بھی ملک کی روحانی معاشرتی اور سماجی تہذیب کی عکاسی کرتا ہے ایشیا ممالک کی تاریخ میں چند ایسے خطاط گزارے ہیں جن کے شاہکاروں کو تاریخ میں نمایاں حیثیت اور پہچان نہیں مل سکی ہمیں اپنے طالبات میں آرٹ کلچرل کو اجاگر کرنے کیلئے ایسی سرگرمیوں کا انعقاد کرتے رہنا چاہیے۔ تقریب کے مہمان خصوصی ایڈمرل سعیداحمد سرگانہ نے کہا آرٹ کے شوق کو صرف آرٹ کے طالبات تک محدود نہیں رکھنا چاہیے بلکہ تمام شعبہ ہائے زندگی سے منسلک سمجھانا چاہئے اگر صادقین جیسی شخصیات نہ ہوتیں تو آج خطاطی کا وجود مٹ چکا ہوتا۔ وہ آرٹسٹ بھی عظیم تھے‘ انسان بھی عظیم تھے۔  ڈرائینگ میں انہیں مکمل عبور حاصل تھا۔ صادقین کا آرٹ مصوری اور خطاطی ایک حسین امتزاج تھا۔ ان کا کام ہمارے ملک کا قیمتی اثاثہ ہے۔ اسے محفوظ بنانے کی ضرورت ہے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے محمد وسیم کھوکھر(ایگزیکٹو ڈائریکٹر, صادقین فاؤنڈیشن) نے کہا کہ صادقین امن کے سفیر تھے صادقین کی شخصیت کا ایک اہم پہلو ان کی شاعری ہے صادقین نے خطاطی‘ ڈرائنگ پیٹنگز اور میورل میں طبع آزمائی کی اور پندرہ ہزار سے زائد فن پارے تخلیق کئے انہوں نے کہا کہ ویمن یونیورسٹی ملتان جنوبی پنجاب کی ایک تاریخی درسگاہ ہے جو مسلسل تعلیمی جدوجہد  میں ترقی کی منزلیں طے کر رہی ہے اسی حوالے سے صادقین فاؤنڈیشن کے تعاون سے ویمن یونیورسٹی ملتان میں آرٹ گیلری اور آرٹ لائبریری قائم کی جائے گی اور اس کے علاوہ آرٹ میں دلچسپی رکھنے والے طالبات کو صادقین کے کام پر ریسرچ کرنے کے لیے مالی مدد بھی فراہم کی جائے گی۔

شروع

مزید :

ملتان صفحہ آخر -