ڈی ایچ او آفس اور نرسنگ ہاسٹلس سمیت کروڑوں روپے کے عمارتوں کو گرانے کا فیصلہ 

ڈی ایچ او آفس اور نرسنگ ہاسٹلس سمیت کروڑوں روپے کے عمارتوں کو گرانے کا ...

  

        چارسدہ(بیورورپورٹ)چارسدہ کے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں ٹراما سنٹر کی تعمیر کے لئے ڈی ایچ او آفس اور نرسنگ ہاسٹل سمیت کروڑو ں روپے کے عمارتوں کو گرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ سنٹر کی تعمیر کے لئے حکومت کی جانب سے چودہ کروڑ50لاکھ روپے منظور کئے گئے ہیں جبکہ سنٹر کی تعمیر کے لئے چھ کروڑ روپے  سے زائد مالیت کے  پانچ عمارتوں کو گرانے کا فیصلہ کیا ہے جس پر چارسدہ کے عوام نے ٹراما سنٹر ہسپتال کے ساتھ متصل  پرانے وٹرنری ہسپتال کے رقبہ پر تعمیر کرنے کی اپیل کی ہے۔ تفصیلات کے مطابق صوبائی حکومت نے چارسدہ کے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں نئے ٹراما سنٹر کی تعمیر کی منظوری دے دی ہے۔ جدید ٹراما سنٹر  14400مربع فٹ کے رقبے پر   مجموعی طور پر 14کروڑ 50لاکھ روپے کی لاگت تعمیر کی جار ہی ہے  جس کی تعمیر کے لئے ہسپتال انتظامیہ کی جانب سے ہسپتال میں موجود تین منزلہ ڈی ایچ او آفس،دو منزلہ نرسنگ ہاسٹل،دوبنگلے اور ایک مسجد کو گرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کی مجموعی لاگت چھ کروڑ روپے سے زائد بنتی ہے۔ ڈیزائن مطابق ٹراما سنٹر کی تعمیر کے لئے  مجموعی رقبہ 14400مربع فٹ درکار ہے جبکہ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے ساتھ متصل پرانا وٹرنری ہسپتال جو اب بند ہے اور اس کی مجموعی اراضی 30ہزار مربع فٹ ہے اور ہسپتال کی ملکیت ہے جس  ٹراما سنٹر کی تعمیر آسانی کے ساتھ ممکن ہے۔ چارسدہ کے عوام نے ڈپٹی کمشنرسمیت تمام متعلقہ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ٹراماسنٹر کی تعمیر کے لئے بہترین منصوبہ بندی کی جائے اور سنٹر کی تعمیر کے لئے پانچ اہم عمارتیں گرانے اور خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچانے کے بجائے ٹراما سنٹر وٹرنری ہسپتال میں تعمیر کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔دوسری جانب ذرائع کے مطابق ٹراما سنٹر کی تعمیر کے لئے ہونے والے اجلاس میں پرانے وٹرنری ہسپتال میں کار پارکنگ جبکہ ان پانچ عمارتوں وک گرا کر ٹراما سنٹر کی تعمیر کی منظوری دے دی گئی ہے جس کے گرانے کے لئے بہت جلد کمیٹی تشکیل دے کر بولی کی جائے گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -