وزیراعظم  کا مشن قوم کو یکجا کرنا اور عالمی سطح پر پاکستان کا روشن تشخیص منوانا ہے: کامران بنگش

وزیراعظم  کا مشن قوم کو یکجا کرنا اور عالمی سطح پر پاکستان کا روشن تشخیص ...

  

       پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیراعلی خیبرپختونخوا کے معاون خصوصی برائے اطلاعات اور اعلیٰ تعلیم کامران خان بنگش نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کا مشن قوم کو یکجا کرنا اور عالمی سطح پر پاکستان کا روشن تشخص اجاگر کرنا اور منوانا ہے حضرت محمد خاتم النبیین صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ذات مبارک ہمارے قومی اتحاد کا واحد ذریعہ ہے آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی تعلیمات کا فوکس عبادات کے ساتھ حقوق العباد کی ادائیگی پر ہے وہ جامعہ اشرفیہ پشاور میں عشرہ رحمت اللعالمین کے سلسلے میں محکمہ اوقاف کے زیر اہتمام نوجوان علماء کانفرنس کی دوسری نشست سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کر رہے تھے کانفرنس کی پہلی نشست کی صدارت وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کے معاون خصوصی برائے اوقاف ظہور شاکر نے کی سیرت النبی ﷺ پر اس شاندار علماء کانفرنس میں صوبے بھر سے جید اور نوجوان علماء نے شرکت کی کامران بنگش نے کہا کہ عشرہ رحمت اللعالمین کے سلسلے میں علماء کانفرنس کے کامیاب انعقاد پر محکمہ اوقاف اور جامعہ اشرفیہ مبارک باد کے مستحق ہیں کانفرنس کی کامیابی پرمعاون خصوصی ظہور شاکر اور مہتمم جامعہ اشرفیہ مولانا محمد طیب قریشی سمیت تمام منتظمین کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں انہوں نے کہا کہ وزیراعلی محمود خان کی مدبرانہ قیادت میں صوبائی حکومت نے بھی حضور صلی اللہ علیہ وسلم کی ذاتِ مبارکہ پر عوام کو متفق و متحد کیا اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی ٹھوس بنیاد رکھی ہماری حکومت نے اپنے اقدامات سے پاکستان کا مطلب کیا لا الہ الااللہ کی عملی تصویر پیش کی صوبائی حکومت نے محکمہ اوقاف کا بجٹ 25 کروڑ روپے سے بڑھا کر 5ارب کر دیا مساجد و مدارس کی بحالی اور تعمیر و مرمت کیلئے ایک ارب روپے مختص کئے چار ہزار مساجد کی سولرائزیشن کے بعد اگلے پانچ ہزار مزید مساجد کی سولرائزیشن پر کام شروع کیا تاکہ نمازی سکون سے پانچ وقتہ عبادات کر سکیں سولہ ہزار سے زائد مساجد کے آئمہ کرام کیلئے اعزازیہ اگلے چند ماہ میں شروع ہو جائے گا جو منفرد اقدام ہے اور ابھی تک سابقہ کسی حکومت کو اسکی توفیق نہیں ہوئی نوجوانوں کیلئے بلاسود قرضوں میں ایک ارب روپے دینی مدارس کے طلبہ کیلئے مختص کئے تاکہ وہ بھی باعزت روزگار کر سکیں مدارس طلبہ کیلئے 75 کروڑ روپے کے سکالرشپ دیئے ہیں نوجوان علماء کیلئے پندرہ کروڑ روپے کا الگ فنڈ مختص کیا گیا ہے کامران بنگش نے کہا کہ ہم نے بحیثیت قوم یہ تاثر زائل کرنا ہے کہ مغرب میں اسلام ہے مگر مسلمان نہیں اور مشرق میں مسلمان ہے مگر اسلام نہیں ہم نے حکومت اور قوم دونوں سطح پر اسلام کا آفاقی پیغام عام کرنا ہے اور اس کی اولین ترجیح حقوق العباد کی ادائیگی ہے انہوں نے کہا کہ حضور ﷺ کے حقوقِ العباد کا چارٹر چودہ سو سال پہلے دنیا نے اپنایا مگر مسلمانوں نے غفلت دکھائی جس کا نتیجہ امت مسلمہ کے زوال کی صورت میں سامنے آیا حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی تعلیمات اپنا کر ہم امت مسلمہ کی عظمت رفتہ فوری بحال کر سکتے ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -