سانگھڑ میں غذائیت کی کمی کا شکار بچوں کی زندگیاں داؤ پر لگ گئیں 

سانگھڑ میں غذائیت کی کمی کا شکار بچوں کی زندگیاں داؤ پر لگ گئیں 

  

 سانگھڑ (این این آئی) صوبہ سندھ کے 23اضلاع میں جاری غذائیت کی کمی کا پرگرام ڈسٹرکٹ سانگھر میں بھی  بدترین نہج  پر  پہنچ چکا ہے۔ ڈسٹرکٹ انتظامیہ کو پروگرام کے حالیہ حالات کے بارے میں کچھ علم نہیں کیونکہ سانگھڑ انتظامیہ کو اس ضمن میں آن بورڈ نہیں لیا جارہا۔ حاصل ہونے والی تفصیلات کے مطابق غذائیت کی کمی کے پروگرام میں ڈسٹرکٹ انتظامیہ کی ہر لحاظ سے شمولیت لازم و ملزوم ہے، ڈسٹرکٹ کوآرڈینیشن کمیٹی فار نیوٹریشن (ڈی سی سی این) کے نام سے منعقد ہونے والی اہم ترین میٹنگ ڈسٹرکٹ انتظامیہ اور پروگرام میں شامل سیکٹرز (این جی اوز) کے مابین اہمیت کی حامل ہے، ڈسی سی سی این کی سربراہی ڈپٹی کمشنر انجام دیتے ہیں اس میٹنگ میں غذائیت کی کمی کے  حوالے سے جاری کاموں پر  ڈپٹی کمشنر اور انتظامیہ کے دیگر ارکان کو تفصیلاََ آگاہ کیا جاتا ہے، مشاورت، معاونت اور فیصلہ سازی جیسے امور انجام پاتے ہیں، میٹنگ میں پروگریس اور رپورٹس پیش کی جاتی ہیں، خوبیوں کو سراہا اور خامیوں کی نشاندہی عمل میں آتی ہے ا ور آئندہ کے لائحہ عمل کو باہمی اتفاقِ رائے سے طے کیا جاتا ہے۔ تاہم ڈسٹرکٹ سانگھر میں ڈی سی سی این میٹنگ تقریباََ ایک سال کے عرصے سے نہیں ہوسکی ہے جس کی بنا پر انتظامی معاملات میں بدترین خلا ء  پیدا  ہوا  اور پروگرام کی خراب ترین کارکردگی نے سانگھڑ میں موجود غذائیت کی کمی کا شکار بچوں کی زندگیوں کواندھیروں میں جھونک دیا۔ سانگھڑ میں غذائیت کی کمی کا شکار بچوں کی تعداد میں روز بروز اضافہ ہوتا چلا جا رہا ہے۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -