حکومت عوام کو بجلی پر ریلیف دینے کی خواہش مند، لیکن کس نے اعتراض اٹھا دیا؟ آئی ایم ایف نہیں بلکہ ۔۔۔

حکومت عوام کو بجلی پر ریلیف دینے کی خواہش مند، لیکن کس نے اعتراض اٹھا دیا؟ ...
حکومت عوام کو بجلی پر ریلیف دینے کی خواہش مند، لیکن کس نے اعتراض اٹھا دیا؟ آئی ایم ایف نہیں بلکہ ۔۔۔

  

اسلام آباد ( ڈیلی پاکستان آن لائن ) حکومت کی جانب سے سردیوں میں بجلی کے صارفین کیلئے رعایتی پیکیج پر سماعت ہوئی ، نیپرا نے حکومت کے پیش کردہ رعایتی پیکیج پر اعتراضات اٹھا دیے ۔

نجی ٹی وی 24نیو زکے مطابق نیپرا کی جانب سے کہا گیا کہ رعایتی پیکیج نومبر سے فروری 2021کے عرصے کیلئے مانگا گیا ہے ، پیکیج کا اطلاق 300یونٹ سے زائد والے صارفین پر ہوگا جس میں کے الیکٹرک کیلئے ایک ارب 30 کروڑ روپے کی سبسڈی رکھی گئی ہے ، پیکج سے معاشی فوائد کیا ہوں گے ، اسکا کا کوئی تجزیہ کیا گیاہے ؟۔

پاور ڈویژن کے حکام نے بتایا کہ ہمارے پاس اضافی بجلی موجود ہے اور فراہم کرنے کی صلاحیت بھی ۔ چیئرمین نیپر انے استفسار کیا کہ 12.96روپے فی یونٹ کس بنیاد پر نکالا گیاہے ؟ ،جنوری میں کھپت زیادہ ہوئی تو ایل این جی کی طلب بڑھے گی ۔ حکام کی جانب سے بتایا گیا کہ سردیوں میں بجلی کی کھپت کم ہوتی ہے ، تمام ڈسکوز سے مل کر سٹریٹجک ایکشن پلان بنا رہے ہیں ۔

کے الیکٹرک کی جانب سے کہا گیا کہ موجودہ صورتحال میں ایندھن کی قیمتوں میں فرق آچکا ہے ، ڈیمانڈ بڑھتی ہے تو ایل این جی کے حوالے سے پریشر بڑھے گا، ہمیں طلب پوری کرنے کیلئے فیول مہنگا خریدنا پڑے گا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -بزنس -