3G اسپےکٹرم کا غےر قانونی استعمال‘ قومی خزانے کو 300ملےن ڈالرز کا نقصان

3G اسپےکٹرم کا غےر قانونی استعمال‘ قومی خزانے کو 300ملےن ڈالرز کا نقصان

کراچی(اکنامک رپورٹر) 3G اسپےکٹرم کا غےر قانونی استعمال کرکے پی ٹی سی اےل قومی خزانے کو 300ملےن ڈالرز کا نقصان پہنچارہا ہے جو ملک مےں براڈ بےنڈ کمپےٹےشن کو بری طرح متاثر کررہا ہے اور اسطرح پی ٹی سی اےل از سرِ نو اپنی اجارہ داری قائم کرنے کی مذموم کوشش کررہا ہے۔ ان حقائق کا انکشاف انٹر نےٹ سروس پرووائےڈرز اےسوسی اےشن آف پاکستان (اسپاک) کے جاری پرےس رےلےز مےں کےا گےا۔ اسپاک کی جانب سے جاری کردہ پرےس رےلےز کے مطابق سال 2010سے پی ٹی سی اےل EVO Nitroکے نام سے مشتہر کردہ انتہائی مہنگی 3G اسپےکٹرم ٹےکنالوجی کی حامل وائر لےس براڈ بےنڈ سروسز مقامی کسٹمرز کو آفر کررہا ہے اور اسطرح 40فےصد سے زائد 3.75مےگا ہرٹز کی اسپےکٹرم پر قابض ہے جو کہ پی ٹی اے کی جانب سے الاٹ کردہ اسپےکٹرم سے کہےں زےادہ ہے۔اس ضمن مےں اسپاک نے دسمبر 2010مےں ملک مےں وائرلےس اسپےکٹرم کی الاٹ کی گئی حدود کے اندر استعمال کو ےقےنی بنانے کے ادارے فرےکوئنسی اےلوکےشن بورڈ (FAB) اور پاکستان ٹےلی کمےونےکےشن اتھارٹی (PTA) کے سامنے ےہ معا ملہ اٹھا ےا ۔ فرےکوئنسی اےلوکےشن بورڈنے پی ٹی سی اےل کی جانب سے غےر قانونی اسپےکٹرم کے استعمال کی تصدےق کی اور پی ٹی اے نے دونوں جانب سے تفصےلی موقف سننے کے بعد ستمبر 2011مےں پی ٹی سی اےل کو ذمہ داٹھہراتے ہوئے 82ملےن روپے کا جرمانہ عائد کےا۔ پی ٹی سی اےل نے مذکورہ فےصلے کو اسلام آباد ہائی کورٹ مےں چےلنج کرتے ہوئے عارضی حکمِ امتناع حاصل کرلےا اور بدستور 3Gاسپےکٹرم کا غےرقانونی استعمال جاری رکھا جو آج تک برقرار ہے ۔۔ اسپاک نے پی ٹی اے کو پی ٹی سی اےل کی جانب سے مذکورہ عارضی حکمِ امتناع کے خلاف اپےل نہ کرنے اور عدالت مےں اس معاملے کو مزےد زےرِ بحث نہ لانے پر سخت تنقےدکا نشانہ بناےاجسکے باعث پی ٹی سی اےل ملک کے دےگر براڈ بےنڈ آپرےٹرز کی حق تلفی کررہا ہے جو انتہائی مہنگی اسپےکٹرم کے قانونی استعمال کےلےے کئی ملےن ڈالرز ادا کرچکے ہےں جبکہ دوسری طرف پی ٹی سی اےل بغےر کسی رقم کی ادائےگی کے اور بولی مےں حصہ لےے بغےر3G اضافی اسپےکڑم کوبِلا خوف استعمال کرتا چلا آرہا ہے۔ پی ٹی سی اےل کی اس مذموم حرکت سے خصوصاً وائی مےکس اور مستقبل کے 3Gآپرےٹرز بری طرح متاثر ہورہے ہےں جنہےں اسپےکٹرم کے قانونی حصول کےلےے کم از کم 300 ملےن امرےکی ڈالرز کی لازمی ادائےگی کرنی پڑتی ہے۔اتصالات اور حکومت کے ما بےن خفےہ معاہدے سے فائدہ اٹھا تے ہوئے پی ٹی سی اےل نے حکومت کو 3Gاسپےکٹرم کی نےلامی سے بھی باز رکھا ہوا ہے جسکی رُو سے پی ٹی سی اےل کی نِج کاری کے وقت نئے لائسےنس کے اجراءکو سات سال کی قانونی مہلت دے کرموئخر کردےا گےا تھاجبکہ دوسری طرف پی ٹی سی اےل نا جائز طور پر بغےر کسی لائسےنس فےس کی ادائےگی 3Gاسپےکٹرم جےسی کمےاب اور مہنگی ترےن ٹےکنالوجی کو استعمال کرتا آرہا ہے جو کہ مسابقتی ےا برابری کی سطح پر ہونے والی شفاف نےلامی کے خلاف بھی ہے۔ اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے جاری کردہ حکم نامہ پی ٹی اے کے 16ستمبر 2011کو جاری کردہ Enforcement Order کی خلاف ورزی ہے جو کسی بھی لحاظ سے پی ٹی سی اےل کو 3Gسپےکٹرم کی چوری اور قومی خزانے کو نقصان پہنچانے کی اجازت نہےں دےتا۔ اسپاک نے پی ٹی اے سے پی ٹی سی اےل کے خلاف سخت اقدامات کی درخواست کی ہے اور کہا ہے کہ پی ٹی سی اےل پر بھاری جرمانہ عائد کرکے 3Gاسپےکٹرم کی مزےد چوری سے روکا جائے

مزید : کامرس