انسداد دہشتگردی ایکٹ کی دفعہ 21ایف کو آئین سے متصادم قرار دینے کیلئے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر

انسداد دہشتگردی ایکٹ کی دفعہ 21ایف کو آئین سے متصادم قرار دینے کیلئے لاہور ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)دہشت گردی کے مجرموں کو سزاﺅں میں رعایت نہ دینے اور انسداد دہشت گردی ایکٹ کی دفعہ 21ایف کو آئین سے متصادم قرار دینے کیلئے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کر دی گئی ۔کوٹ لکھپت جیل میں دہشت گردی کے جرم میں عمر قید کی سزا کاٹنے والے قیدی نصراللہ خان نے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ روالپنڈی کی ٹرائل کورٹ نے سال 2000میں اسے دہشت گردی کے ایک مقدمے میں موت کی سزا سنائی تاہم سپریم کورٹ نے انکی اپیل پر فیصلہ کرتے ہوئے سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کر دیا ، درخواست گزار کے مطابق سال 2000سے لے کرکے سال 2006تک انہیں سزا میں رعایت دی جاتی رہی تاہم بعد میں محکمہ جیل خانہ جات نے انسداد ددہشت گردی ایکٹ کی دفعہ 21ایف کے تحت سزا میں رعایت دینا بند کر دیا، درخواست گزار کے مطابق جیل قوانین کے مطابق قیدیوں کو معاشرے کا مفید شہری بننے کا موقع دیا جاتا ہے اور اس نے دوران سزا تعلیم حاصل کی جبکہ اس کا رویہ بھی پرامن رہا ، درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ انسداد دہشت گردی ایکٹ کی دفعہ اکیس ایف کو آئین کے آرٹیکل 8سے متصادم قرار دے کر کالعدم کیا جائے اور 2006سے بند کی گئی سزا میں رعایت کو بحال کیا جائے۔

آئین سے متصادم

مزید :

صفحہ آخر -