کزن کو بدنامی سے بچانے کےلئے کیس پر اثر انداز ہونے والی پولیس کمشنر مستعفی

کزن کو بدنامی سے بچانے کےلئے کیس پر اثر انداز ہونے والی پولیس کمشنر مستعفی
کزن کو بدنامی سے بچانے کےلئے کیس پر اثر انداز ہونے والی پولیس کمشنر مستعفی

  

لندن(نیوزڈیسک)ایک ڈپٹی کمشنر کو ایک قتل کی سازش کے مقدمے میں ایک رشتہ دار کی زندگی کے بارے میں شرمناک تفصیلات کو روکنے کے لئے سماعت پر اثرا نداز ہونے کی پاداش میں مستعفی ہونے پر مجبور کیا گیا ۔ تیس سالہ تفہین شریف نے اپنے ایک رشتہ دار کا نام ایک قتل کے مقدمے میں گواہ کے طور پر شامل کرنے سے ایک جج کومقدمہ سےباز رکھنے کےلئے اپنی حیثیت کا استعمال کیا تھا۔اس کی اس غیر قانونی اپروچ نے قتل کے اس مقدمہ کو بہت حد تک نقصان پہنچایا ہے اور تفتیشی پولیس افسران اور عدالت کو کسی نتیجے میں پہنچنے پر مشکل پیش آرہی ہے۔ پاکستانی نژاد تفہین شریف لیبر کونسلر بھی ہے ،اسے ینگ کونسلر آف دی ائیر کا خطاب بھی مل چکا ہے اس صورت حال سے اس کی حیثیت غیر مستحکم ہوچکی تھی اس لئے اس نے گرمیوں میں استعفیٰ دے دیا لیکن اس کے استعفیٰ کے پیچھے کیا عوامل کار فرما تھے ۔ اس کا انکشاف اس وقت تک نہیں کیا جاسکتا جب تک اس مقدمہ کی سماعت قانونی وجوہات کی بنا پر ختم نہیں ہوجاتی ۔ تفصیل کے مطابق مس نویم ڈیڈ جوکہ تفہین کی کزن تھی ایک لوٹرائی اینگل کا مرکزی کردار تھی جو بعد ازاں ایک سفاک قتل پر منتج ہوا جس کےمنگیتر کو اس کے رقیب نے کرائے کے قاتل سے گولی مروا کو قتل کروادیا تھا جس کا نام شہزاد ماہروف تھا لیکن ڈپٹی کمشنر آف پولیس ہوتے ہوئے مس تفہین نے اپنی کزن کو بدنامی سے بچانے کے لئے عدالت کے جج پر اپنی حیثیت استعمال کرنے کی کوشش کی جس سے مقدمہ کی سماعت مشکل ہوگئی اور اسے اپنی نوکری سے استعفیٰ دینا پڑا۔

مزید :

جرم و انصاف -