فاٹا میں قیام امن افغانستان میں امن سے مشروط ہے ،اخونزادہ چٹان

فاٹا میں قیام امن افغانستان میں امن سے مشروط ہے ،اخونزادہ چٹان

  

باجوڑ ایجنسی ( نمائندہ پاکستان )فاٹا میں امن و امان کو یقینی بنانے کیلئے افغانستان میں قیام امن ضروری ہے۔ اخونزادہ چٹان ان خیا لات کا اظہار سابق ممبر قومی اسمبلی اور پاکستان پیپلز پارٹی فاٹا کے صدر نے یوتھ کنونشن کے انعقاد کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ فاٹا میں باالخصوص اور پوری مُلک میں باالعموم امن و امان کو برقرار رکھنے کیلئے افغانستان کے امن کیلئے کردار ادا کرنا چاہئے انہوں نے کہا کہ اپریشن میں فاٹا کے ذیادہ تر تعلیمی ادارے اور تجارتی مراکز تباہ ہو چکے ہیں ان کی دوبارہ تعمیر کیلئے 500ارب روپے درکار ہیں جس سے دوبارہ آباد کاری اور تعلیمی اداروں سمیت پورا انفرا سٹرکچر ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے سابقہ دور حکومت میں پیپلز پارٹی نے فاٹا میں ریکارڈ ترقیاتی کام کئے تھے جس میں سڑکوں کی تعمیر ، ملازمتیں ، بجلی اور پاک صاف پانی کی فراہمی سمیت ایجنسی کے کئی تحصیلوں میں شناختی کارڈ کی آسان فراہمی کیلئے نادرا دفاتر قائم کئے گئے اس کیساتھ ساتھ ایجنسی کے عوام کے درینہ مسئلہ پاسپورٹ آفس کو ایجنسی منتقل کیا گیا تھا ایک سوال کے جواب میں اُنہوں نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو فاٹا یوتھ کے مشکلات اور عالمی مسائل سے بخوبی واقف ہے آنے والے الیکشن میں فاٹا یوتھ کیلئے سکالرشپ اور دوسرے تعلیمی سکلز اپنے منشور میں شامل کریں گے باجوڑ میں گزشتہ کئی سالوں سے پاسپورٹ آفس بند پڑا ہے چونکہ اب امن و امان کا مسئلہ بھی کافی حد تک بہتر ہوا ہے اس لئے ایم این ایز کا فرض بنتا ہے کہ وہ وزیر داخلہ چوہدری نثار سے بات کرکے پاسپورٹ آفس ایجنسی میں فعال بنانے کیلئے کردار ادا کریں

مزید :

پشاورصفحہ آخر -