ضلع ناظم کرک کا ویمن اینڈ چلڈرن ہسپتال کی ابتر حالت کا نوٹس

ضلع ناظم کرک کا ویمن اینڈ چلڈرن ہسپتال کی ابتر حالت کا نوٹس

  

کرک (بیورورپورٹ) ضلع ناظم کرک نے وومن اینڈ چلڈرن ہسپتال کرک کی ابتر صورت حال کا نوٹس لیکر ایک ماہ کے اندر اصلاحات لانے کا بیڑا اٹھا لیا ، ڈسٹرکٹ کونسلرز پر مشتمل سپیشل مینجمنٹ کمیٹی تشکیل دیدی گئی، ضلعی حکومت جانب سے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کرک میں آئی سی یو ، سی سی یو یونٹس، چھ بیڈز پر مشتمل ریکوری سنٹر اور پرائمری برن کیئر سنٹر کے قیام کا فیصلہ ،چیئرمین ڈیڈک ایم پی اے گل صاحب خان کے اعلان کردہ منصوبوں کو عملی جامہ پہناتے ہوئے شہر ی علاقوں کے گھر گھر کو ایک ماہ کے اندر پانی کی فراہمی کیلئے رپیڈ ایکشن،شہر کو پانی فراہم کرنے والے سات آبنوشی منصوبوں کی فوری بحالی ، چار ٹیوب ویلز پر دس روز میں سولر پلانٹس نصب کیئے جائینگے ،پبلک ہیلتھ کے مقامی حکام کے ہمراہ آبنوشی منصوبوں کا معائنہ ، جملہ آبنوشی لائنوں کو متبادل روٹ کے ذریعے اوور ہیڈ ٹینک سے منسلک کرکے شہری علاقوں کو پانی فراہم کی جا ئیگی ۔تفصیلات کے مطابق ضلع ناظم کرک ڈاکٹر عمر دراز خٹک نے فریضہ حج کی ادائیگی کے بعد پہلی بار دفتر آکر انتہائی مصروف دن گذارا جس دوران انہوں نے ایک ماہ کے اندر وومن اینڈ چلڈرن ہسپتال کرک اور ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کرک کی حالات زار سدھارنے کا بیڑا اٹھانے سمیت چیئرمین ڈیڈک ایم پی اے گل صاحب خان کے فوکل پرسن کی حیثیت سے شہری علاقوں کو پانی کی فراہمی کیلئے رپیڈ ایکشن لیا اس حوالے سے ایک اہم جلاس ان کے دفتر میں منعقد ہوا جس میں ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر کرک ڈاکٹر فضل الہدی ، ڈی ایچ کیو ہسپتال کرک کے ایم ایس ڈاکٹر طاہر حیلجی اور وومن اینڈ چلڈرن ہسپتال کرک کے ایم ایس ڈاکٹر افتخار احمد نے شرکت کی اس موقع پر تجاویز کی روشنی میں ضلع ناظم نے وومن اینڈ چلڈرن ہسپتال کرک سٹی کی ابتر صورت حال پر فوری ایکشن لیتے ہوئے اس میں اصلاحات لانے کا فیصلہ کیا انہوں نے ڈی ایچ کیو ہسپتال کرک کی کارکردگی اطمینان بخش قرار دیتے ہوئے اس میں مزید اصلاحات لانے کا فیصلہ بھی کیا انہوں نے اس حوالے سے میڈیا کو بریفینگ دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ہسپتالوں میں اصلاحات لانے کیلئے ڈسٹرکٹ کونسلرز عبد الصادق ، انتخاب عالم ، فیمل ڈسٹرکٹ کونسلر آمنہ ، عبد التواب خٹک اور ڈاکٹر فہیم جو چیئر پرسن بھی ہونگے ، پر مشتمل پانچ رکنی سپیشل مینجمنٹ کمیٹی قائم کی گئی ہے انہوں نے ڈسٹرکٹ گور نمنٹ کی جانب سے وومن اینڈ چلڈرن ہسپتال کرک کو بجلی جنریٹر کی فراہمی ، گیس فراہمی ،خرا ب اینکیو بیٹرز کی مرمتی ،روزانہ کی بنیاد پر ایک ٹینک پانی کی فراہمی ، ایمر جنسی یونٹ میں وارڈ کی بحالی اور صفائی کا نظام بہتر بنانے کی منظوریاں بھی دی اور کہا کہ مذکورہ ہسپتال میں قائم ڈی ایچ او آفس ختم کرکے ان کو جملہ سٹاف سمیت ضلعی سیکرٹریٹ میں دفتر دیا جا ئیگا اور دونوں ہسپتالوں کے مابین کوئیک سروس کیلئے دو ایمبولینس فراہم کیئے جا ئینگے علاوہ ازیں انہوں نے بتایا کہ ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر ہسپتال کرک کی کارکردگی مزید بہتر بنانے کیلئے یہا ں دس روز کے اندر آئی سی یو ، سی سی یو یونٹس سمیت چھ بیڈز پر مشتمل ریکوری وارڈ اور چار بیڈ زپر مشتمل پرائمری برن کیئر سنٹر قائم کیئے جا ئینگے جس میں آگ سے جلنے والے مریضوں کو ابتدائی طبی امداد دی جا ئیگی انہوں نے ان اصلاحات کے حوالے سے مقامی میڈیا کو پری اور پوسٹ وزٹس کرانے کا بھی فیصلہ کیا تاکہ عوام کو اس حوالے سے بر وقت اطلاعات مل سکے علاوہ ازیں انہوں نے شہری علاقوں کو پینے کے پانی کی فراہمی کیلئے رپیڈ ایکشن لیتے ہوئے پبلک ہیلتھ کے مقامی دفتر کا ہنگامی دورہ بھی کیا یہاں ایکسیئن پبلک ہیلتھ کرک خان محمد وزیر ، ایس ڈی اوز ذیشان گنڈا پور ،اللہ نواز خٹک سمیت سب انجینئر محیط خان ، ایس ڈی اے مشتاق احمد پر مشتمل حکام سے تفصیلی مشاورت کی گئی جس دوران شہر کو پانی کی فراہمی کیلئے خطیر فنڈ ز سے قائم ہونے والے سات آبنوشی منصوبوں کی بحالی پر اتفاق کیا گیا اور ان منصوبوں کی بحالی پر فوری کام کے آغاز کیلئے ضلع ناظم نے پبلک ہیلتھ کے متعلقہ حکام ، ضلعی کونسلر تواب خٹک اور اپنے والد چیف نور دراز خٹک کے ہمراہ منصوبوں کا معائنہ بھی کیا اس موقع پر میڈیا کو تفصیلات فراہم کرتے ہوئے ضلع ناظم نے کہا کہ وہ بطور فوکل پرسن شہر کے گھر گھر کو پانی کی فراہمی کے سلسلے عوام سے کیئے گئے ایم پی اے گل صاحب خان کے وعدے کو ایک ماہ کے اندر ایفا کرینگے انہوں نے اس منصوبے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ شہر کو پانی کی فراہمی کیلئے نصب سا ت ٹیوب ویلوں میں سے تین کو بجلی اور چار ٹیوب ویلوں کو سولر سسٹم نصب کرکے بحال کیا جا ئیگا جس سے حاصل ہونے والی پانی متبادل پائپ لائن بچھا کر ضلعی ہیڈ کواٹر کی حدود میں پہلے سے موجود ریز ر وائر ٹینک اور اس کے بعد اوور ہیڈ ٹینک پہنچا کر شہری علاقوں کو پانی فراہم کیا جا ئیگا انہوں نے اس حوالے سے پبلک ہیلتھ کے حکام کو تخمینہ لاگت تیار کرنے سمیت سولر سسٹم کی تنصیب کیلئے متعلقہ ادارے سے بھی رابطہ کیا انہوں نے میڈیا کو بتایا کہ ہسپتالوں کی حالت زار سدھارنے اور شہری علاقوں کو بجلی پہنچانے کیلئے ایک ماہ کا ٹارگٹ رکھا گیا ہے جس دوران دن رات ایک کرکے کام کرونگا اور متعلقہ اداروں کے حکام سے بھی کام لو نگا ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -