”خلاءمیں موجود ہماری خوفناک چیز بہت جلد زمین سے ٹکرا نے والی ہے“ چین نے ایسا اعلان کردیا کہ امریکہ اور یورپ کی نیندیں اڑ گئیں

”خلاءمیں موجود ہماری خوفناک چیز بہت جلد زمین سے ٹکرا نے والی ہے“ چین نے ایسا ...
”خلاءمیں موجود ہماری خوفناک چیز بہت جلد زمین سے ٹکرا نے والی ہے“ چین نے ایسا اعلان کردیا کہ امریکہ اور یورپ کی نیندیں اڑ گئیں

  

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) چین نے لگ بھگ 5سال قبل اپنا خلائی سٹیشن زمین کے مدار میں چھوڑا تھا جو تب سے زمین کے گرد چکر لگا رہا ہے۔ اب اس کے متعلق چینی حکام نے ایسا اعلان کر دیا ہے کہ پوری دنیا کی نیندیں اڑ گئی ہیں۔ ویب سائٹ popularmechanics کی رپورٹ کے مطابق چینی حکام نے ایک پریس کانفرنس میں اعلان کیا ہے کہ اب ان کا تیانگونگ 1نامی اس خلائی سٹیشن پر کنٹرول برقرار نہیں رہا اور یہ زمین کی طرف گر رہا ہے۔ چینی خلائی ایجنسی کے حکام کا کہنا تھا کہ خلائی سٹیشن 2017ءکے اواخر میں زمین سے ٹکرا جائے گا، تاہم ابھی سے اس مقام کا تعین نہیں کیا جا سکتا جہاں یہ گرے گا۔ رپورٹ کے مطابق کافی عرصے سے افواہیں گردش کر رہی تھیں کہ چینی خلائی سٹیشن زمین پر گرنے والا ہے۔ اب چین کی طرف سے اس کی تصدیق کیے جانے پر امریکہ و یورپ سمیت پوری دنیا متفکر ہو گئی ہے۔

’پیوٹن کے پاس 9/11 حملوں کی خفیہ تصاویر موجود ہیں جو منٹوں میں امریکی ڈرامے کا پول پوری دنیا کے سامنے کھول سکتی ہیں‘ ایسی خبر منظر عام پر کہ امریکی حکومت کی راتوں کی نیندیں اُڑگئیں

عام طور پر مشن سے فارغ ہونے والی سیٹلائٹس اور خلائی سٹیشن زمین پر گرتے ہوئے راستے میں ہی جل جاتے ہیں۔ چونکہ یہ سائنسدانوں کے کنٹرول میں ہوتے ہیں اس لیے سائنسدان کسی بھی ممکنہ نقصان سے بچنے کے لیے انہیں سمندر میں گراتے ہیں تاکہ اگر ان کے کوئی ٹکڑے نیچے گریں تو شہری آبادیوں میں نہ گریں۔ مگر چین کے اس خلائی سٹیشن کی صورتحال مختلف ہے۔ یہ چینی ماہرین کے کنٹرول سے باہر ہو چکا ہے اس لیے اسے اپنی مرضی کی جگہ پر نہیں گرایاجا سکتا اور وہ یہ بھی نہیں جانتے کہ یہ کب زمین پر گرے گا۔ چینی سائنسدان صرف اتنا جانتے ہیں کہ یہ آئندہ سال کے آخر میں کسی بھی وقت اور کسی بھی جگہ پر گر سکتا ہے، جس سے خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ اس کے ٹکڑے کسی شہری آبادی میں گر کر تباہی کا باعث بن سکتے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -