غلط کاری سے انکار کرنے پر 3ماہ کی دلہن کوآدھی رات کودھکے دے کرگھرسے نکال دیا،خاتون کی درخواست پر پولیس سے رپورٹ طلب

غلط کاری سے انکار کرنے پر 3ماہ کی دلہن کوآدھی رات کودھکے دے کرگھرسے نکال ...
غلط کاری سے انکار کرنے پر 3ماہ کی دلہن کوآدھی رات کودھکے دے کرگھرسے نکال دیا،خاتون کی درخواست پر پولیس سے رپورٹ طلب

  

لاہو(نامہ نگار)سسرالیوں نے مبینہ غلط کاری سے انکار کرنے پر بہوکوکاتشددکانشانہ بناکرآدھی رات کودھکے دے کرگھرسے باہرنکال دیا،3ماہ کی دلہن سدرہ اپنی بیوہ ماں آسیہ کے ہمراہ انصاف کے لئے سیشن عدالت پہنچ گئی۔ایڈیشنل سیشن جج اعجاز بوسال نے تھانہ گرین ٹاﺅن پولیس سے آج 22ستمبر کو رپورٹ طلب کرلی ہے ۔

عدالت میں درخواست گزار سدرہ نے اپنے وکیل کی وساطت سے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ 2015ءمیں فوزیہ اور اس کی فیملی کے ممبران نے میری والدہ سے میرا رشتہ مانگا ،سبز باغ دکھائے ،میر بیوہ ماں آسیہ ان کے جھانسے میں آ گئی اورانہوں نے دلاور سے میر ی شادی کردی ،سسرال گئی توبعد میں پتہ چلا کہ اس کے سسرال والے غلط لوگ ہیں۔ عدالت کے پوچھنے پر لڑکی نے بتایا کہ شادی کے بعد اس کا خاوند دلاور ایک ماہ ٹھیک رہا بعد میں اس نے اسے غلط کام کرنے پر مجبور کرنا شروع کردیااس کے انکار پر اس پر تشدد کرتا اس کو کہتا کہ جہاں وہ رہتا ہے یہ میرے نہیں گھر بھی میرا نہیں تم میرے ساتھ کماﺅ تو ہم الگ اپنا گھر بنا لیں گے انکار پر اس نے تشدد کیا جس سے اس کے کان کا پردہ پھٹ گیا تشدد کا سلسلہ چلتا رہا۔

درخواست گزار نے مزید کہا کہ اب آدھی رات کو دھکے دے کر اسے گھر سے باہر نکال دیا گیاہے ،مقامی تھانے میں بھی کارراوئی کے لئے درخواست دی گئی لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی ہے ،عدالت سے استدا ہے کہ مذکورہ افرا کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا جائے جس پرفاضل جج نے متعلقہ تھانے سے رپورٹ طلب کرلی ہے ۔

مزید :

لاہور -