بحری شاہراہ رشیم کے دوسرے عالمی رابطہ فورم کا انعقاد

بحری شاہراہ رشیم کے دوسرے عالمی رابطہ فورم کا انعقاد

بیجنگ(آئی این پی/شِنہوا) بحری شاہراہ رشیم کا دوسرابین الاقوامی کمیونیکیشن فورم چین کے شہر جو ہائی میں منعقد ہوا۔پانچ سال پہلے چین کے صدر شی جن پھنگ نے اکیسویں صدی کی بحری شاہراہ رشیم کی مشترکہ تعمیر کی اپیل کی تھی۔گزشتہ پانچ برسوں کے دوران چین اور شاہراہ رشیم سے وابستہ ممالک کے ساتھ سازوسامان کی تجارت کی کل مالیت 50 کھرب امریکی ڈالر سے تجاوز کرگئی ہے۔جبکہ بیرون ممالک میں چین کی براہ راست سرمایہ کاری کی کل مالیت60ارب امریکی ڈالر سے بڑھگئی ہے فورم کا اہتمام چائنہ میڈیا گروپ اور چین کے صوبہ گوانگ دونگ کی عوامی حکومت نے کیا ہے ۔ اس موقع گوانگ دونگ کے گورنر ما شینگ رے نے فورم سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گوانگ دونگ نے ملک میں سب سے پہلے بیلٹ اینڈ روڈ کی تعمیر سے متعلق عمل کی منصوبہ بندی کا اعلان کیا اور بیلٹ اینڈ روڈ سے وابستہ ممالک کے ساتھ ٹھوس تعاون کو مضبوط بنایا۔

چین نے شاہراہ رشیم سے وابستہ ممالک کے ساتھ 80 سے زائد اقتصادی و تجارتی تعاون کے زونز قائم کئے ہیں۔جن سے روزگار کے متعددمواقع پیدا ہوئے جن سے بیلٹ اینڈ روڈ سے وابستہ ملکوں کے عوام کو فائدہ ہوا۔چین کا صوبہ گوانگ دونگ بحری شاہراہ رشیم کا اہم علاقہ ہے۔

مزید : عالمی منظر