6ماہ کے دوران عطائیوں کے 5620اڈے بند ،12کروڑ روپے جرمانہ

6ماہ کے دوران عطائیوں کے 5620اڈے بند ،12کروڑ روپے جرمانہ

 لاہور (جنرل رپورٹر)سپریم کورٹ کے احکامات کی تعمیل میں پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن نے اپریل سے اب تک18,350سے زائد علاج گاہوں پر چھاپے مارکر5,620عطائیوں کے کاروباربندکردیے ہیں اور اعدادوشمار کے مطابق ان میں سے5,441عطائیوں نے عطائیت کے اڈے بند کر کے دوسرے کاروبار شروع کر دیے ہیں۔ مزید برآں صوبہ بھر کی ضلعی انتظامیہ نے3,130علاج گاہوں پر چھاپے مارے اورپنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن ایکٹ2010ء کے تحت1,500سے زائدعطائیوں کے اڈے سیل کیے ہیں ۔دونوں نے 17اپریل 2018ء سے اب تک21,486 علاج گاہو ں کی چیکنگ کی اور7,000سے زائدعطائیوں کے اڈے بند کیے ہیں۔کمیشن کی ٹیموں نے سب سے زیاد845 عطائیوں کے کاروبارلاہور میں بندکیے جبکہ فیصل آباد447،گجرانوالہ 368،شیخوپورہ 360 اور قصورمیں350عطائیوں کے اڈے سیل کیے ہیں۔ علاوہ ازیں کمیشن کو 2,900سے زائدڈی سیلنگ کی درخواستیں بھی موصول ہوچکی ہیں،جن پر مزید کارروائی جاری ہے اور عطائیوں کو اب تک 11کروڑ 96لاکھ روپے سے زیادہ جرمانے بھی کیے جا چکے ہیں۔

۔واضح رہے کہ جولائی 2015ء سے اب تک پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن 15,746 عطائیوں کے اڈے سیل کر چکاہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1