پابندی کے باوجود شہری علاقوں میں گوالوں کی حویلیاں آباد ، انتظامیہ خاموش

پابندی کے باوجود شہری علاقوں میں گوالوں کی حویلیاں آباد ، انتظامیہ خاموش

 لاہور(جاوید اقبال) صوبائی دارالحکومت دوبارہ جانوروں(بھینسوں) کی منڈیوں میں تبدیل ہو گیا ہے 80فیصد بھینسوں کی حویلیاں آباد ہو گئی ہیں ۔شالا مار، راوی، داتا گنج بخش اور عزیز بھٹی زون کے علاقوں مہر فیاض کا لونی ، حمید پورہ ، داروغہ والا، رشید پورہ بھینسوں کے بڑے مراکز ہیں بتایا گیا ہے کہ ضلعی انتظامیہ نے شہر میں جانور گائیں بھینسیں رکھنے پر پابندی عائد کر رکھی ہے جس کے لئے دفعہ 144نافذ ہے مگر 4زونوں نے گوالوں سے ماہانہ طے کر کے انہیں اپنی بھینسیں واپس لانے کی کھلی چھٹی دے دی ہے 80فیصد گوالے بھینسیں اپنی حویلیوں میں واپس لے آئے ہیں جبکہ زیادہ تر بھینسیں خالی پلاٹوں میں رکھی گئی ہیں بتایا گیا ہے کہ مذکورہ ٹاؤن 2000 سے 3ہزار روپے ماہانہ فی بھینس وصول کرا لیتے ہیں زیادہ تر بھینس شالا مار زون میں ہیں ۔ ضلعی انتظامیہ نے شہر میں جانوروں کا چارہ لانے پر پابندی عائد کر رکھی ہے مگر جہاں بھی قانون کی دھجیاں اڑائی جا رہی ہیں دن رات بھینسیں گلیوں اور خالی پلاٹوں میں گشت کر کے فضا اور آبادیوں کو آلودہ اور گندہ کر رہی ہیں اس حوالے سے میئر لاہور کرنل(ر) مبشر جاوید کا کہنا ہے کہ پابندی پر سختی سے عملدرآمد کرائیں گے ایسے زون جہاں بھینسیں واپس آئی ہیں ان کے چیف آفیسروں کے خلاف کارروائی کریں گے جبکہ شالا مار زون کے چیف آفیسر ملک طارق کا کہنا ہے کہ ذمہ داری ریگولیشن ونگ کی ہے کارروائی کی جائے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1