وفاقی بجٹ سرمایہ دارون، جاگیر داروں اور صنعتکاروں کا بجٹ ہے ، مولانا گوہر شاہ

وفاقی بجٹ سرمایہ دارون، جاگیر داروں اور صنعتکاروں کا بجٹ ہے ، مولانا گوہر شاہ

چارسدء (بیورو رپورٹ) سابق رکن قومی اسمبلی مولانا سید گوہر شاہ نے کہا ہے کہ وفاقی بجٹ سر مایہ داروں ، جاگیر داروں اور صنعتکاروں کا بجٹ ہے جس کو ہم یکسر مسترد کرتے ہیں۔ بجٹ غیر متوازن اور عوام کے معاشی قتل کے مترادف ہے ۔ غریب اور متوسط طبقے کے لوگوں کو ریلیف دینے کی بجائے ان کے مشکلات میں اضافہ کیا گیا جو کہ عوام کے ساتھ سرا سرا نا انصافی اور حکومت کی ناقص پالیسی کی عکاسی کر تا ہے ۔ موجودہ بجٹ عوام دشمن اور اکے ساتھ سنگین مذاق ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے میڈیا سے بات کر تے ہوئے کیا ۔ مولانا سید گوہر شاہ نے کہا کہ حکومت کی طر سے پیش کردہ بجٹ غریب عوام ر بم گرانا ہے ۔ مہنگائی میں ہو شربا اضافے سے عوام پریشانی اور مشکلات کے دلدل میں پھنس جائینگے ۔ انہوں نے کہا کہ غریب عوام کو ریلیف دینے کی بجائے مہنگائی کا سارا بوجھ غریب عوام کے کندھوں پر ڈالا گیا ہے ۔ پی ٹی آئی ماضی کے حکومتوں کے عائدکر دہ ٹیکسوں کو بلا جواز قرار دیتی رہی مگر ان کی اپنی حکومت نے ایسے اقدامات اٹھائے جن سے کم آمدن والے خاندانوں پر براہ راست اثرپڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف حکومت سادی اور کفایت شغاری اختیار کرنے اور اخراجات میں کمی کی بجائے قرضوں پر انخصار کی پالیسی پر عمل پیرا ہے ۔ خالیہ بجٹ میں سوئی گیس اور بجلی کی قیمتوں میں جو اضافہ کیا گیا اس سے عوام کے مشکلات میں کمی کی بجائے اضافہ ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ بجٹ غیر متوازی اور عوام کے پریشانی کا سبب ہے ۔ اشیائے خورد و نوش میں بے تخاشہ اضافے سے عوام کی زندگی اجیرن بن جائیگی ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے غربت کے خاتمے کے دعوئے جھوٹ کا پلندہ ہے ۔انہوں نے حکومت کی طرف سے عوام دشمن بجٹ پیش کرنے کی شدید مذمت کی اور کہا کہ وفاقی بجٹ سر مایہ داروں ، جاگیر داروں اور صنعتکاروں کا بجٹ ہے جس کو ہم یکسر مسترد کرتے ہیں۔ بجٹ غیر متوازن اور عوام کے معاشی قتل کے مترادف ہے ۔ غریب اور متوسط طبقے کے لوگوں کو ریلیف دینے کی بجائے ان کے مشکلات میں اضافہ کیا گیا جو کہ عوام کے ساتھ سرا سرا نا انصافی اور حکومت کی ناقص پالیسی کی عکاسی کر تا ہے ۔ موجودہ بجٹ عوام دشمن اور اکے ساتھ سنگین مذاق ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر