کشمیریوں پر ایک ایک دن قیامت کا گزر رہا،آخری گولی تک لڑنے اور آخری حد تک جانے کی باتیں کرنے والے پہلا قدم اٹھانے کو تیار نہیں :امیرالعظیم

کشمیریوں پر ایک ایک دن قیامت کا گزر رہا،آخری گولی تک لڑنے اور آخری حد تک جانے ...
کشمیریوں پر ایک ایک دن قیامت کا گزر رہا،آخری گولی تک لڑنے اور آخری حد تک جانے کی باتیں کرنے والے پہلا قدم اٹھانے کو تیار نہیں :امیرالعظیم

  


لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان امیر العظیم نے کہاہے کہ کشمیریوں پر ایک ایک دن قیامت کا گزر رہاہے مگر ہمارے حکمران زبانی جمع خرچ کے علاوہ کچھ نہیں کر رہے،آخری گولی تک لڑنے اور آخری حد تک جانے کی باتیں کرنے والے پہلا قدم اٹھانے کو تیار نہیں، آخری گولی چلانے کی نوبت تو اس وقت آئے گی جب پہلی گولی چلے گی،کشمیر بنے گا پاکستان کے نعرے لگانے اور اپنے شہید بیٹوں کو سبز ہلالی پرچم میں دفن کرنے والے پاکستان کی راہ دیکھ رہے ہیں۔

منصورہ میں جاری مرکزی تربیت گاہ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئےامیر العظیم نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر میں  48 دن گزر گئے لوگ بھوک،  پیاس اور بیماریوں سے مر رہے ہیں،خوراک نہ ادویات، بھارت کی غاصب فوج نے ڈیڑھ ماہ میں پندرہ ہزار نوجوانوں کو غائب اور سینکڑوں بچیوں کو اٹھا لیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ کشمیر کا مسئلہ کشمیریوں نے اپنی جانوں کا نذرانہ دے کر زندہ رکھاہواہے، 72 سال سے الجھے ہوئے کشمیر کے مسئلہ کو پاکستانی حکمرانوں نے کبھی بھی اپنی پہلی ترجیح نہیں بنایا اس وقت بھی بھارت نے 80 لاکھ کشمیریوں کو محبوس اور محصور کر رکھاہے اور لوگ اپنے مردوں کو بھی گھروں میں دفنانے پر مجبور ہیں مگر ہمارے حکمران بیانات اور تقریروں سے آگے نہیں بڑھے،حکمرانوں نے غفلت اور بزدلی کا مظاہرہ کیا اگر وہ جہاد کا راستہ اختیار کرتے تو اب تک کشمیر آزاد ہو چکا ہوتا،وزیراعظم کو ٹویٹس اور وٹس ایپ کی بجائے سلامتی کونسل کے رکن ممالک کا دورہ کر کے عالمی برادری کو کشمیریوں کی پشت پر کھڑا کرنا چاہیے تھا۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...