پروگرام ریڈیو کلینک میں ایم ایس شاہدرہ ٹیچنگ ہسپتال شریک

  پروگرام ریڈیو کلینک میں ایم ایس شاہدرہ ٹیچنگ ہسپتال شریک

  

لاہور(فلم رپورٹر)پروگرام ریڈیو کلینک میں ایم ایس شاہدرہ ٹیچنگ ہسپتال ڈاکٹر شاہد قریشی اور کنسلٹنٹ کارڈک سرجن کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی ڈاکٹر احمد کامران خان کی شرکت،میزبان اور پروڈیوسر مدثر قدیر تھے۔پروگرام کے آغاز میں گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر شاہد قریشی کا کہنا تھاکہ شاہدرہ ہسپتال 367بیڈز پر مشتمل ہے جس میں 300بیڈز فنکشنل ہیں،شاہدرہ ہسپتال میں صوبے کا دوسرا بڑا ڈائیلاسز وارڈ موجود ہے جہاں پر 37مشینیں نصب ہیں ہم عوام کی خدمت کلا جزبہ لے کر اپنا کردار ادا کررہے ہیں مریض ہیں تو ہم ہیں یہ سارا نظام ہی مریضوں کی فلاح وبہبود کی خاطر قائم ہے،ہسپتال میں وزیر اعظم عمران خان کے ویڑن کے مطابق مریضوں کو تمام تر سہولیات فری مہیا کی جارہی ہیں۔ جبکہ پروگرام کے آخری حصے میں شمولیت اختیار کرتے ہوئے کارڈک سرجن ڈاکٹر احمد کامران خان کا کہنا تھا کہ دل کی بیماریاں عمر کے ہر حصے میں مختلف نوعیت کی ہوتی ہیں ان میں کچھ ویلز اور کچھ شریانوں سے تعلق رکھتی ہیں،ویلز کی بیماریاں بچپن ہی سے شروع ہوجاتی ہیں جن کا آخری حل اوپن ہارٹ سرجری ہی سے ممکن ہوتا ہے،جبکہ شریانوں کے حوالے سے اینجو پلاسٹی کی جاتی ہے اور اس میں بھی ایسی شریانیں جو مین شریان کی تنگی یا دل کے سنٹراور بائیں جانب کی شریان کی تنگی ہو اس کے لئے سرجری ہی کرنی پرتی ہے۔

،دل کا آپریشن پیچدہ مسئلہ ہوتا ہے،بیٹنگ ہارٹ سرجری میں دل کے اوپر کرافٹنگ کی جاتی ہے جبکہ اون پمپ بائی پاس سرجری میں مریض کو مشین پر ڈال دیا جاتا ہے ایک ڈیڑھ گھنٹے کے لئے مشین مریض کے دل اور پھیپھڑوں کام کرتی ہے۔دل کے پٹھے کو جتنا نقصان کم ہوگا اتنا ہی جلد مریض صحت یاب ہوجائے گا۔پاکستان میں دل کی سرجری کے طریقہ کار میں مہارت کی وجہ سے مریض کی سرجری کے بعد 

مزید :

کلچر -