ٹرمپ کا ایک اور یو ٹرن، ٹک ٹاک کیساتھ معاہدے کا عندیہ

  ٹرمپ کا ایک اور یو ٹرن، ٹک ٹاک کیساتھ معاہدے کا عندیہ

  

واشنگٹن(این این آئی)امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک بار پھر یو ٹرن لیتے ہوئے شارٹ ویڈیو شیئرنگ ایپلی کیشن ٹک ٹاک کا امریکی کمپنیوں کیساتھ ہونیوالا مجوزہ معاہدہ منظور کرنے کا عندیہ دیدیا۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ انہیں خوشی ہوگی کہ وہ چینی ایپلی کیشنز اور امریکی کمپنیوں کے درمیان طے پانے والے معاہدے کو منظور کریں گے۔ڈونلڈ ٹرمپ نے مجوزہ معاہدے پر بات کرتے ہوئے بتایا کہ معاہدے کے مطابق تینوں ادارے مشترکہ طور پر امریکی ریاست ٹیکساس میں ایک نیا ادارہ تشکیل دیں گے جو امریکا میں ٹک ٹاک کے معاملات دیکھے گا۔امریکی صدر کے مطابق نئی کمپنی تشکیل دیے جانے سے 25 ہزار امریکیوں کو روزگار ملے گا اور نیا ادارہ امریکا میں تعلیم کی بہتری کے لیے 5 ارب ڈالر کے فنڈز بھی دے گا۔ڈونلڈ ٹرمپ نے واضح کیا کہ ٹک ٹاک، اوریکل اور وال مارٹ کے درمیان اگر معاہدہ ہوجاتا ہے تو وہ اس کی منظوری دیں گے اور اگر وہ معاہدہ نہیں ہوتا تو بھی کوئی بات نہیں۔امریکی صدر کی جانب سے ٹک ٹاک کے معاہدے کو منظور کیے جانے کا عندیہ دیے جانے کے بعد اب خیال کیا جا رہا ہے کہ ٹک ٹاک اور امریکی انتظامیہ کے درمیان معاملات بہتر ہوجائیں گے۔ امریکا کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو بھیجا جانے والا  زہریلے مواد سے آلودہ پیکیج پکڑا گیا۔  غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو آنے والے پیکیج سے زہریلا مواد رائسن ملا ہے جو اسکریننگ ڈیسک پر پکڑا گیا۔ فیڈرل بیورو انویسٹیگیشن(ایف بی آئی) اور سیکرٹ سروس نے زہریلے مواد سے آلودہ پیکیج کی تحقیقات شروع کر دی ہیں۔ حکام کے مطابق تفتیش کاروں کا ماننا ہے کہ  زہریلے مواد سے آلودہ پیکیج کینیڈا سے بھیجا گیا ہے۔ دوسری جانب رائل کینیڈین ماونٹڈ پولیس(آر سی ایم پی)ا کہنا ہے کہ وہ وائٹ ہاس کو بھیجے گئے مشکوک پیکیج کی تحقیقات کے لیے ایف بی آئی کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہے۔

زہریلا مواد

ٹرمپ عندیہ

مزید :

صفحہ اول -