بھارت کو سرحدی کشیدگی پر پاکستان سے بات کرنا پڑیگی: فاروق عبد اللہ، انڈیا نے کشمیریوں کو مشتعل کر دیا: الجزیرہ 

    بھارت کو سرحدی کشیدگی پر پاکستان سے بات کرنا پڑیگی: فاروق عبد اللہ، انڈیا ...

  

 سری نگر (این این آئی)مقبوضہ کشمیرکی جماعت نیشنل کانفرنس کے صدر اور رکن پارلیمان فاروق عبدللہ نے بھارتی حکومت سے سرحدی کشیدگی کم کرنے کیلئے پاکستان سے بات چیت کرنے کا مطالبہ کیا ہے اورکہاہے کہ بھارت جیسے چین سے بات کر رہا ہے ایسے ہی اس صورتحال سے نکلنے کیلئے دوسرے پڑوسی سے بات کرنی ہوگی۔ بھارتی لوک سبھا (ایوان زیریں)سے خطاب میں فاروق عبدللہ نے کہا کہ سرحدی کشیدگی میں اضافہ ہو رہا ہے اور لوگ مر رہے ہیں۔ اس صورتحال سے نکلنے کا راستہ بات چیت کے سوا کوئی اور نہیں ہے۔علاوہ ازیں الجزیرہ ٹیلی ویژن نے اپنی ایک رپوٹ کہا ہے کہ جموں وکشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے 5اگست 2019 کے بھارتی اقدام نے کشمیریوں کو سخت مشتعل کر رکھا ہے جس کا واضح اظہار رواں برس محرم الحرام کے دوران کشمیری شیعہ نوجوانوں کی طرف سے آزادی کے حق میں پرزور نعروں کی صورت میں دیکھنے میں آیا۔الجیرہ ٹی وی نے بتایا کہ بھارتی فورسز نے آزادی کے حق میں نعرے بلند کرنے والے شیعہ عزاداروں پر طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا اور انہیں منتشر کرنے کیلئے پیلٹ چلائے اور آنسو گیس کے گولے داغے جس سے درجنوں لوگ زخمی ہو گئے۔ کشمیر کی ابتر صورتحال اور بھارتی ریاستی جبر نے علاقے میں شیعوں کو بھی بڑے پیمانے پر متحرک کر دیا ہے۔ بھارتی حکام طویل عرصے سے اس بیانیے پر زور دے رہے ہیں کہ کشمیر میں جو تحریک چل رہی ہے شیعہ اور دیگر اقلیتیں اسکا ساتھ نہیں دے ر ہیں لیکن حالیہ برسوں میں شیعہ مرد و خواتین اپنے سیاسی حقوق کے لیے تیزی سے آواز اٹھارہے ہیں اور وہ کھل کو بھارتی حکمرانی کے خلاف مزاحمت کی حمایت کر رہے ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا شیعوں نے ہمیشہ جدوجہد آزادی میں کسی نہ کسی طرح کا کردار ادا کیا ہے جبکہ 1930 ء کی دہائی میں بھی شیعہ رہنما ڈوگرہ حکمرانوں کے خلاف جدوجہد میں سنی رہنماؤں کے شانہ بشانہ کھڑے تھے۔

فاروق عبداللہ 

مزید :

صفحہ اول -