پرنٹر، سکینر خراب، سیاہی،سٹیشنری ختم، فرنٹ ڈیسک منصوبہ فلاپ ہونے کا خدشہ

پرنٹر، سکینر خراب، سیاہی،سٹیشنری ختم، فرنٹ ڈیسک منصوبہ فلاپ ہونے کا خدشہ

  

 ملتان (وقائع نگار) حکومت پنجاب  کا تھانہ کلچر ختم کرنے کا دعویٰ بے سودنکلا۔ صوبہ بھر میں کرروڑوں روپے کی لاگت سے تیار ہونے والے تھانوں میں فرنٹ ڈیسک دھیرے دھیرے اپنی افادیت کھونے لگے ہیں۔ملتان کے بیشتر تھانوں میں گزشتہ تین ماہ سے سٹیشنری نایاب اور زیادہ تر فرنٹ ڈیسک پر سیاہی۔سکینر اور پرنٹر خراب پڑے ہیں۔ فرنٹ ڈیسک عملہ  اہم نوعیت کے جرم کی شہریوں کی درخواستیں (بقیہ نمبر10صفحہ 6پر)

 وصول کرنے سے انکاری۔بغیر ٹیگ کے  درخواست ایس ایچ او کو سماعت کیلئے بھیجوا نا معمول بن گیا۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے سابق حکومت پنجاب نے صوبہ بھر میں پولیس کلچر کی تبدیلی کیلئے سب سے پہلے تھانوں میں عوام درپیش مسائل سے چھٹکارہ دلوانے کیلئے فرنٹ ڈیسک بنوائے۔ ایک اندازے کے مطابق ملتان سمیت صوبہ بھر کے تھانوں میں فرنٹ ڈیسک کی تعمیر کروانے  میں کروڑوں روپے کی لاگت آئی ہے۔سابقہ حکومتی بیان کے مطابق تھانوں میں فرنٹ ڈیسک کے قیام سے شہریوں کو پریشانیوں سے نجات حاصل ہوئی۔فرنٹ ڈسیک عملے کو کنٹریکٹ پرتعینات کیا گیا۔شروع میں کچھ عرصہ تو فرنٹ ڈیسک نے ایسا محسوس کروایا۔جیسے اب عوامی مسائل حل ہونگے۔بدقسمتی سے ایک بار پھر فرنٹ ڈیسک کا منصوبہ پولیس کی روایتی کلچر کی نذر ہوگیا۔اور وہ دھیرے گہرے اپنی افادیت کھونے لگا ہے۔کیونکہ بحثیت سپروائزرایس ایچ او کرے گا۔اسی بات کا فائدہ اٹھاتے ہوئے افسر تھانہ مہتم  نے فرنٹ ڈیسک پر درخواستوں پر ٹیگ لگوانے کے بجائے ڈائریکٹ اپنے پاس منگوانی شروع کردی ہے۔جس کا نقصان سائلین کو ہورہا ہے۔کیونکہ ایس ایچ اوز اپنی مرضی سے درخواست پر تاخیری حربہ استعمال کرکے ملزمان کو فایدہ پہنچانے میں مصروف عمل ہیں۔ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ ملتان کے اکثر تھانوں میں کے فرنٹ پر سرکاری سٹیشنری نایاب ہے۔متعلقہ پولیس اپنی مدد آپکے تحت سٹیشنری خرید رہے ہیں۔اس طرح کنٹریکٹ پر بھرتی ہونے والے فرنٹ ڈیسک عملہ کو تنخواہوں کی ادائیگی میں بدستور مختلف مسائل کا سامنا ہے۔بیشتر فرنٹ ڈیسک پر سکینر۔پرنٹرز سمیت دیگر  اشیاء خراب پڑی ہیں۔تمام مرمتی خرچہ بھی عوام سے وصول کیا جارہا ہے۔دوسری جانب قانونی ماہرین کے مطابق  فرنٹ ڈیسک اب شہریوں کیلیے پریشانی کا باعث بنتا جارہا ہے۔ملتان کی ہٹ دھرمی یہ ہے کہ وہ فرنٹ کی ضروریات بروقت فراہم کرنے میں ناکام نظر آرہے ہیں۔پولیس ملازمین نے وزیر اعلی پنجاب۔اۂ جی پنجاب اور آر پی او ملتان سے مذکورہ صورت حال پر فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

فرنٹ ڈیسک

مزید :

ملتان صفحہ آخر -