نوشہرہ کینٹ، غیر ملکی سمگل شدہ کپڑے کا بڑا کاروباری مرکزبن گیا 

  نوشہرہ کینٹ، غیر ملکی سمگل شدہ کپڑے کا بڑا کاروباری مرکزبن گیا 

  

نوشہرہ (بیورورپورٹ )نوشہرہ پولیس اور کسٹم کی ملی بھگت، باڑہ کلاتھ مارکیٹ نوشہرہ کینٹ، غیر ملکی سمگل شدہ کپڑے کا بڑا کاروباری مرکز بن گیا اربوں روپے کے غیر ملکی کپڑے کے کنٹینرز پولیس اور کسٹم کی ملی بھگت سے نوشہرہ کینٹ اور بعدازاں پنجاب کے مختلف اضلاع تک سمگل کئے جاتے ہیں قومی خزانے کو سمگلر مافیا دھمک کی طرح چاٹنے لگا پولیس اور کسٹم خانہ پری کیلئے موٹرسائیکل سوارگنڈہ ماروں کے پرچے کرکے بڑی مچھلیوں کے محافظ بن گئے نوشہرہ کینٹ میں واقع باڑہ کلاتھ مارکیٹیں سمگل شدہ غیر ملکی کپڑے کے بڑے تجارتی مراکز بن گئے ہیں غیر ملکی کپڑے کی سمگنلگ کے اس دھندے کی وجہ سے ایک طرف قومی خزانے کو ماہانہ اربوں روپے کا نقصان جبکہ دوسری طرف کپڑے کی قومی صنعت بھی زبوں حالی کا شکار ہے اس حوالے سے معلوم ہوا ہے کہ نوشہرہ کینٹ کی باڑہ کلاتھ مارکیٹیوں میں لگ بگ 6ہزار کے قریب کپڑے کی دوکانیں ہیں کسی بھی قسم کے ٹیکس ادائیگی سے مستثنیٰ ہیں نوشہرہ کینٹ تک یہ سمگل شدہ کپڑا پشاور، علاقہ غیر سے جی ٹی روڈ کے راستے پہنچایا جاتا ہے اور پھر نوشہرہ کینٹ سے مختلف اضلاع کو سمگل کیا جاتا ہے قومی صنعت اور خزانے کو دیمک کی طرح چاٹنے والی مافیاکو قانون کی طرف سے کھلی چھٹی ہے اور اس کھلی چھٹی کے عوض سمگلرمافیا اعلیٰ حکام کو باقاعدہ لاکھوں روپے بھتہ دیتا ہے ادھر نوشہرہ کسٹم اور پولیس خانہ پری کے لئے موٹرسائیکل سوار گنڈے ماروں کو پرچہ کرکے بڑی مچھلیوں کو تحفظ دیتے ہیں غصب کرپشن کی عجب کہانی میں کرپشن کے خلاف کام کرنے والے تمام ادارے کسی نہ کسی صورت شریک ہیں جو قومی خزانے اور صنعت کو تباہی کے کنارے پہنچانے میں سہولت کار وں کا کردار نبھا رہے ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -