عالمی کرکٹ میں پاکستان کو تنہاءکرنے کے خواب دیکھنے والا بھارت شدید مشکلات کا شکار، آئی پی ایل کے بعد یو اے ای میں کس سیریز کا انعقاد ہو سکتا ہے؟ حیران کن تفصیلات سامنے آ گئیں

عالمی کرکٹ میں پاکستان کو تنہاءکرنے کے خواب دیکھنے والا بھارت شدید مشکلات کا ...
عالمی کرکٹ میں پاکستان کو تنہاءکرنے کے خواب دیکھنے والا بھارت شدید مشکلات کا شکار، آئی پی ایل کے بعد یو اے ای میں کس سیریز کا انعقاد ہو سکتا ہے؟ حیران کن تفصیلات سامنے آ گئیں
کیپشن:    سورس:   Twitter

  

دبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن) بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ ان انڈیا (بی سی سی آئی) عالمگیر موذی وباءکورونا وائرس کے باعث متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کو ”دوسرا گھر“ بنانے پر مجبور ہو گیا ہے جس نے انڈین پریمیر لیگ (آئی پی ایل) کے بعد انگلینڈ کی میزبانی کیلئے بھی ان میدانوں کا انتخاب کرنے پر غور شروع کر دیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق پاکستان کو طویل عرصے تک سیکیورٹی صورتحال کے باعث متحدہ عرب امارات میں اپنی ہوم کرکٹ پر مجبور ہونا پڑا اور پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کا بھی وہیں پر آغاز ہوا مگر صورتحال بہتر ہونے پر پاکستانی سرزمین پر مکمل لیگ اور انٹرنیشنل کرکٹ کی بتدریج واپسی ہورہی ہے لیکن پاکستان کو عالمی کرکٹ میں تنہاءکرنے کا خواب دیکھنے والا بھارت خود اپنے ملک میں کورونا وائرس کی تباہ کاریوں کے سبب یو اے ای میں ’پناہ‘ لینے پر مجبور ہو گیا ہے۔ 

بھارت میں عالمگیر موذی وباءکورونا وائرس کی انتہائی خوفناک صورتحال کے باعث آئی پی ایل کا 13 واں ایڈیشن گزشتہ روز وہاں شروع ہوچکا ہے جبکہ بی سی سی آئی اب جنوری، فروری میں انگلینڈ کی بھی صحرائی وینیوز پر میزبانی پر غور کررہا ہے، یہی نہیں بلکہ اگر صورتحال بہتر نہیں ہوئی تو اگلے برس کی بھارتی لیگ بھی یو اے ای میں ہی منعقد ہوسکتی ہے۔

گزشتہ روز بی سی سی آئی اور امارات کرکٹ بورڈ کے درمیان ایک میزبانی معاہدہ طے پایا ہے، اس حوالے سے بھارتی بورڈ کے سیکرٹری جے شاہ نے اعلان کیاکہ بی سی سی آئی نے انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ (ای سی بی) کے ساتھ ہوسٹنگ ایگریمنٹ پر دستخط کئے ہیں جس سے دونوں ممالک کے درمیان کرکٹ تعلقات مزید مستحکم ہوں گے۔

انہوں نے ای سی بی کے نائب چیئرمین خالد الزارونی سے میٹنگ میں معاہدے پر دستخط کئے، اس موقع پر بی سی سی آئی کے صدر سارو گنگولی اور خازن ارون دھمل بھی موجود تھے۔ اگرچہ جے شاہ نے معاہدے کی تفصیلات نہیں بتائیں تاہم ایک رپورٹ کے مطابق فی الحال اس معاہدے میں آئی پی ایل 2020 کا ایڈیشن شامل ہے۔

مزید :

کھیل -