سپین میں پہاڑوں پر آتش فشاں پھٹ پڑا

سپین میں پہاڑوں پر آتش فشاں پھٹ پڑا
سپین میں پہاڑوں پر آتش فشاں پھٹ پڑا

  

بارسلونا (ارشدنذیر ساحل )کئی روز کی بے چینی کے بعد گزشتہ سہ پہر 3 بج کر 12 منٹ پر ایل پاسو میونسپلٹی کے پہاڑوں میں آتش فشاں پھٹ پڑا۔زلزلے کے جھٹکوں کا آغاز 11 ستمبر کو کیمبری ویجا نیشنل پارک سے ہوا۔آتش فشاں پھٹنے کے باعث قریبی علاقوں سے لوگوں کو نکال لیا گیاہے۔حکام کے مطابق لاوا آہستہ آہستہ کم ہو رہا ہے تاہم اسے بالکل نیچے جانے میں وقت لگے گا۔ وزارت دفاع کے مطابق کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے فوج بھی تیار ہے۔نیشنل جیوگرافک انسٹی ٹیوٹ کے مطابق ریکٹر سکیل پر زلزلے کی شدت 2 محسوس کی گئی جبکہ زلزلے کے 3 جھٹکے محسوس کئے گئے، 11 ستمبر کے بعد آئی این جی نے 6600 سے زیادہ چھوٹے زلزلے ریکارڈ کئے۔

پیر 13 اگست کو حکام نے آتش فشاں پھٹنے کے خطرے کے پیش نظر علاقے کو ریڈ الرٹ پر رکھنے کا فیصلہ کیا۔ اس لیول کے تحت آبادی کو خطرے سے آگاہ کیاگیا۔مقامی لوگوں کو صورتحال سے نمٹنے اور انخلا کے لئے متعدد میٹنگز کی گئیں۔ مجموعی طور پر 35 ہزار سے زائد افراد اس سے متاثر ہوئے ہیں۔ لاپالما میں آتش فشانی سرگرمیاں 1971 میں بند ہوئیں جن کا دوبارہ آغاز 2017 میں ہوا۔جمعہ کے روز صورتحال کی نگرانی کرنے والی کمیٹی نے آتش فشاں کے خطرے سے آگاہ کیا تھا۔

لا پالما کے صدر مارینوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے شہریوں کوخبردار کیاہے اور آتش فشاں والے علاقے کے قریب جانے سے منع کیاہے۔ انھوں نے کہاکہ واقع کے بعد سڑکوں کو خالی رکھنا بہت ضروری ہے تاکہ ایمرجنسی سروسز میں رکاوٹ پیدا نہ ہو۔ واقع میں کسی کے بھی شخص کے متاثر ہونے کی اطلاع تاحال موصول نہیں ہوئی۔

مزید :

بین الاقوامی -