لودھراں،ترقیاتی منصوبوں پرد و ا رب روپے خرچ کرنیکافیصلہ 

لودھراں،ترقیاتی منصوبوں پرد و ا رب روپے خرچ کرنیکافیصلہ 

  

  

لودھراں (نمائندہ پاکستان)رکن صوبائی اسمبلی پیر عامر اقبال شاہ نے کہا ہے کہ ضلع بھر میں ترقیاتی منصوبوں پر 2 ارب سے زائد رقم خرچ کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ یہ رقم سالانہ ترقیاتی پروگرام کے تحت مالی سال 2022-23 کے دوران 67 ترقیاتی سکیموں پر(بقیہ نمبر45صفحہ نمبر7)

 خرچ کی جائے گی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ضلع لودھراں میں ہائر ایجوکیشن کی 2، سپیشل ایجوکیشن کی 1، پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر ڈیپارٹمنٹ کی 3، واٹر سپلائی اینڈ سینی ٹیشن کی 17، ایل جی اینڈ سی ڈی کی 15، گورننس اینڈ آئی ٹی کی 1، روڈز کی 18، پبلک بلڈنگ کی 1 جبکہ سپورٹس اینڈ یوتھ افیئرز کی 1 ترقیاتی اسکیمیں زیر تکمیل ہیں۔ انہوں نے بتایاکہ ضلع میں نئے ترقیاتی سکیموں میں روڈ سیکٹر کی 9 جبکہ پبلک بلڈنگز اور ایمرجنسی سروسزسیکٹر کی 1,1 ترقیاتی سکیم شامل ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج یہاں ترقیاتی محکموں کے سربراہان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ رکن صوبائی اسمبلی پیر عامر اقبال شاہ کو بتایا گیا کہ سالانہ ترقیاتی پروگرام 2022-23 نیو سکیم کے تحت کہروڑپکا میلسی چوک تا نرنجن موڑ 4.20کلومیٹرسٹرک کی بحالی، خیر پور رود کہروڑپکا تا بستی کنڈ والا 17کلومیٹر، میلسی چوک کہروڑپکا تا شہید اسلم چوک 1.1کلومیٹر، این فائیو جلہ موڑ تا گیلے وال 12کلومیٹر، منڈھالی موڑ تا مہرآباد شریف 9کلومیٹر روڈ کی بحالی، پرمٹ شجاع آباد روڈ تا پل 12ایم پی آر بہشتی کینال براستہ گیلے وال تا موسی کھوکھا 9.35کلومیٹر روڈ کی بہتریاور کارپٹنگ اور پل 12ایم پی آر سے بہشتی کینال براستہ گیلے وال تا موسی ولال کھوکھا فیز IIکے 9.35کلومیٹر روڈ کی بحالی کے منصوبے شامل ہیں۔ ان کو مزید بتایا گیا کہ سالانہ ترقیاتی پروگرام 2022-23کے نیو سکیم کے منصوبے میں لودھراں میں ریسکیو سب اسٹیشن کے قیام اور اسسٹنٹ کمشنر آفس دنیاپور کی مرمت کے منصوبے بھی شامل ہیں۔ ایم پی اے پیر عامر اقبال شاہ نے افسران کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں کی فنانشل اور فزیکل پراگریس میں نمایاں بہتری لائی جائے۔ انہوں نے تعمیراتی محکموں کے افسران کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ وہ فیلڈ میں نکلیں اور ترقیاتی منصوبوں کی نگرانی کریں۔ انہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں کی سست روی اور انکے معیار میں کسی طور غفلت یا کوتاہی ہرگز برداشت نہیں کی جائے گی۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -