گجرات پولیس کرپشن سکینڈل کیس نیب کو واپس بھجوادیا

گجرات پولیس کرپشن سکینڈل کیس نیب کو واپس بھجوادیا

  

لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے جج قمر الزمان نے گجرات پولیس کرپشن سکینڈل کیس نیب ترمیمی آرڈیننس 2022 کے تحت واپس بھیجوا دیا  ،عدالت نے سابق سی ٹی اولاہور رائے اعجاز سمیت دیگر پولیس افسر ملزموں کی عبوری ضمانتیں بھی 2،2لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکوں کے عوض منظور کرلیں عدالت نے اپنے فیصلے میں لکھاہے کہ نیب عدالت کو ترمیمی آرڈیننس کے بعد کیس کی سماعت کا اختیار نہیں رہا،عدالت اس فورم پر 500 میلین سے کم رقم کا کیس نہیں سن سکتی،نیب چیئرمین کیس کو متعلقہ فورم پر بھجوائیں رائے ضمیر سمیت دیگر نے بریت کی درخواست بھی دائر کر  رکھی ہے نیب ریفرنس کے مطابق چار ڈی پی او رائے اعجاز،رائے ضمیر،کامران ممتاز اور سہیل ظفر چھٹہ شامل ہیں دیگر ملزمان میں محمد اشرف، فیاض، مزمل، رمیض اور رضوان سمیت ڈی پی او گجرات اکاؤنٹس آفس کے اہلکار شامل ہیں،سابق سی ٹی او رائے اعجاز اور دیگر افسروں پر پرپولیس ملازمین کی مبینہ کروڑوں روپے کی وردیاں ہڑپ کرنے کا الزام ہے، ملزمان پر پولیس کی گاڑیوں کو ملنے والا ڈیزل اور بڑے پیمانے پر صوابدیدی فنڈزخورد بورد کرنے کا بھی الزام عائد ہے۔

مزید :

علاقائی -