بھارتی ائیر فورس نے ابھینندن کو وقت سے پہلے ریٹائر کرنے کا فیصلہ کرلیا ، بھارتی ذرائع ابلاغ کا دعویٰ

بھارتی ائیر فورس نے ابھینندن کو وقت سے پہلے ریٹائر کرنے کا فیصلہ کرلیا ، ...
بھارتی ائیر فورس نے ابھینندن کو وقت سے پہلے ریٹائر کرنے کا فیصلہ کرلیا ، بھارتی ذرائع ابلاغ کا دعویٰ

  

ممبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن )  27 فروری  کو  پاکستان پر حملے  کرنے کی کوشش میں زخمی حالت میں گرفتار ہونے والے ونگ کمانڈر ابھینندن کو وقت سے قبل  ریٹائرمنٹ دینے کا فیصلہ کرلیا۔

نجی ٹی وی " جیو نیوز "کے مطابق  بھارتی ویب سائٹ "ہندوستان ٹائمز " نے ابھینندن کی ریٹائرمنٹ سے متعلق خبر شائع کی ، جس میں کہا گیا کہ  مگ 21  کے 4 سکواڈرنز میں سے نمبر  51 سکواڈرن ابھینندن 30 ستمبر کو ریٹائر ہو جائیں گے ، باقی  3 مگ 21 سکواڈرنز بھی مرحلہ وار 2025 تک ریٹائرڈ ہو جائیں گے ۔

واضح رہے کہ 26 فروری2019 کو شب 3 بجے سے ساڑھے تین بجے کے قریب تین مقامات سے پاکستانی حدود کی خلاف ورزی کی کوشش کی جن میں سے دو مقامات سیالکوٹ، بہاولپور پر پاک فضائیہ نے ان کی دراندازی کی کوشش ناکام بنادی تاہم آزاد کشمیر کی طرف سے بھارتی طیارے اندر کی طرف آئے جنہیں پاک فضائیہ کے طیاروں نے روکا جس پر بھارتی طیارے اپنے 'پے لوڈ' گراکر واپس بھاگ گئے۔پاکستان نے اس واقعے کی شدید مذمت کی اور بھارت کو واضح پیغام دیا کہ اس اشتعال انگیزی کا پاکستان اپنی مرضی کے وقت اور مقام پر جواب دے گا، اب بھارت پاکستان کے سرپرائز کا انتظار کرے۔

بعد ازاں 27 فروری کی صبح پاک فضائیہ کے طیاروں نے لائن آف کنٹرول پر مقبوضہ کشمیر میں 6 ٹارگٹ کو انگیج کیا، فضائیہ نے اپنی حدود میں رہ کر ہدف مقرر کیے، پائلٹس نے ٹارگٹ کو لاک کیا لیکن ٹارگٹ پر نہیں بلکہ محفوظ فاصلے اور کھلی جگہ پر سٹرائیک کی، جس کا مقصد یہ بتانا تھا کہ پاکستان کے پاس جوابی صلاحیت موجود ہے لیکن پاکستان کوئی ایسا کام نہیں کرنا چاہتا جو اسے غیر ذمہ دار ثابت کرے۔جب پاک فضائیہ نے ہدف لے لیے تو اس کے بعد بھارتی فضائیہ کے 2 جہاز ایک بار پھر ایل او سی کی خلاف ورزی کرکے پاکستان کی طرف آئے لیکن اس بار پاک فضائیہ تیار تھی جس نے دونوں بھارتی طیاروں کو مار گرایا، ایک جہاز آزاد کشمیر جبکہ دوسرا مقبوضہ کشمیر کی حدود میں گرا۔پاکستان حدود میں گرنے والے طیارے کے پائلٹ ابھینندن کو پاکستان نے حراست میں لیا جس کا نام ونگ کمانڈر ابھی نندن تھا جسے بعد ازاں پروقار طریقے سے واہگہ بارڈر کے ذریعے بھارتی حکام کے حوالے کردیا گیا۔

مزید :

اہم خبریں -بین الاقوامی -