وہ گھرانہ جو ساڑھے تین سو سال سے برطانوی شاہی خاندان کے ارکان کی فوتگی اور تاج پوشی کے انتظامات کرتا آرہا ہے

وہ گھرانہ جو ساڑھے تین سو سال سے برطانوی شاہی خاندان کے ارکان کی فوتگی اور ...
وہ گھرانہ جو ساڑھے تین سو سال سے برطانوی شاہی خاندان کے ارکان کی فوتگی اور تاج پوشی کے انتظامات کرتا آرہا ہے
سورس: Twitter/@RoyalFamily

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) آنجہانی ملکہ برطانیہ الزبتھ دوئم کی آخری رسومات گزشتہ روز ادا کر دی گئیں۔ ان کی آخری رسومات کا انتظام و انصرام 65سالہ ڈوک آف نورفک ایڈورڈ ولیم فزلن ہوورڈ کے ہاتھ میں تھا جو سابق ریسنگ ڈرائیور بھی ہیں۔ برطانوی شہریوں کی اکثریت نے ملکہ کے سفر آخرت کے لیے ایڈورڈ ولیم کی طرف سے کیے گئے انتظامات پر اطمینان کا اظہار کیا ہے۔ 

میل آن لائن کے مطابق اس حوالے سے کیے گئے ایک آن لائن سروے میں 85فیصد برطانوی شہریوں کا کہنا ہے کہ ملکہ برطانیہ کو ان کے شایان شان خراج تحسین پیش کیا گیا اور بہت احسن طریقے سے ان کی آخری رسومات ادا کی گئیں۔رپورٹ کے مطابق اب برطانیہ کے نئے بادشاہ چارلس سوئم کی تاج پوشی کی تقریب کی ذمہ داری بھی 18ویں ڈوک آف نورفک ایڈورڈ ولیم ہی کو دی گئی ہے۔ یہ تقریب آئندہ سال منعقد ہو گی۔ 

واضح رہے کہ ایڈورڈ ولیم برطانیہ کے ’ارل مارشل ‘ کے عہدے پر فائز ہیں۔ یہ عہدہ 350سال سے ایڈورڈ ولیم کے خاندان کے پاس چلا آ رہا ہے۔ شاہی خاندان کے انتقال کرجانے والے افراد کی آخری رسومات اور دیگر تقریبات کے انعقاد کی ذمہ داری ارل مارشل پر ہوتی ہے۔

ان کا خاندان ساڑھے تین صدیوں سے برطانوی شاہی خاندان کی آخری رسومات، تاج پوشی کی تقریبات اور حتیٰ کہ برطانوی پارلیمنٹ کے افتتاحی سیشن کے انعقاد کی ذمہ داریاں نبھاتا آ رہا ہے۔ایڈورڈ ولیم کے دادا برنارڈ فزلن ہوورڈ، جو 16ویں ڈوک آف نورفک تھے، نے 1953ءمیں ملکہ الزبتھ دوئم کی تاج پوشی کی تقریب کے انعقاد کی ذمہ داری نبھائی تھی۔

مزید :

برطانیہ -