جماعت اسلامی کی اردو کو سرکاری زبان کا درجہ دینے کیلئے قرارداد اسمبلی میں جمع

جماعت اسلامی کی اردو کو سرکاری زبان کا درجہ دینے کیلئے قرارداد اسمبلی میں جمع

لاہور(نمائندہ خصوصی) امیر جماعت اسلامی صوبہ پنجاب و پارلیمانی لیڈر صوبائی اسمبلی ڈاکٹر سید وسیم اخترنے اردو کو سرکاری اوردفتری زبان کادرجہ دینے اور ملک میں کالاباغ ڈیم کی تعمیر کے حوالے سے قراردادیں پنجاب اسمبلی کے سیکرٹریٹ میں جمع کروادیں۔اردوزبان کے حوالے سے جمع کروائی گئی قرارداد میں کہاگیا ہے کہ’’ 1973ء کے آئین کے آرٹیکل 251کے تحت1988میں اردو کو سر کا ر ی اور دفتری زبان کادرجہ دیاجاناتھا لیکن27سال گزرجانے کے باوجوداردوکوسرکاری زبان کادرجہ نہ دیاجاسکا جوآئین پرعمل درآمد نہ کرنے کے مترادف ہے۔یہ ایوان وفاقی حکومت سے مطالبہ کرتا ہے کہ وہ1973ء کے آئین کے تقاضوں کوپوراکرتے ہوئے اردوکوسرکاری ودفتری زبان کادرجہ دے۔

علاوہ ازیں ڈاکٹر سید وسیم اختر کی طرف سے کالاباغ ڈیم کے حوالے سے جمع کروائی گئی قرار داد میں کہاگیاہے کہ’’ملک میں سیلاب کی روک تھام اور سندھ اور بلوچستان میں پانی کی فراہمی اور بجلی کے شارٹ فال کوپوراکرنے کے لئے وفاق چاروں صوبوں سے مشارت کے بعد کالاباغ ڈیم کی تعمیر کااعلان کرے‘‘۔ ڈاکٹر سید وسیم اختر نے میڈیاکوجاری کردہ بیان میں کہاہے کہ ملک میں کالاباغ ڈیم کی اشد ضرورت ہے۔اس حوالے سے حکمران سنجیدگی کا مظاہرہ کریں۔کالاباغ ڈیم خالصتاً قومی مفاد کامنصوبہ ہے جسے ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت سیاسی بنادیاگیا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1