ایران نے پاکستانی مصنوعات پر تکنیکی اعتراضات اٹھاتے ہوئے پابندی لگا دی ،ترجیحی تجارتی معاہدہ معطل

ایران نے پاکستانی مصنوعات پر تکنیکی اعتراضات اٹھاتے ہوئے پابندی لگا دی ...

 اسلام آباد(خصوصی رپورٹ)ایران نے پاکستانی مصنوعات پر تکنیکی اعتراضات اٹھاتے ہوئے ان کی در آمد پر پابندی عائد کردی ہے جس سے ایران اور پاکستان کے درمیان ترجیحی تجارتی معاہدہ معطل ہوگیاہے تاہم اس اقدام کے پیچھے عرصہ دراز سے ایران اور پاکستان کے درمیان تناؤ کا شکار سیاسی تعلقات کا اشارہ بھی واضح ہے۔پاکستانی علاقوں کی طرف سے ایرانی سرحد ی علاقوں میں شدت پسندوں کے مبینہ طور پر وقتاًفوقتاً حملوں کی وجہ سے ایرانی حکام نے تجارتی معاہدہ کو یکطرفہ طور پر معطل کر دیا ۔دوسری طرف ایران کیساتھ 2010میں 424ملین ڈالر کی تجارت 2013میں صرف 62ملین ڈالر رہ گئی تھی گزشتہ ایک سال سے ایران نے ہماری سبزیوں اور پھلوں کی درآمد پر پابندی عائد کی ہوئی تھی جبکہ اب مکمل طورپر ہر طرح کی درآمد پر پابندی کر دی گئی ہے۔ایران کی طرف سے تجارتی معاہدے کی معطلی کے بعد وزیر تجارت خرم دستگیر معاہدہ کی بحالی کیلئے تہران پہنچ گئے ،وزیر تجارت خرم دستگیر پاکستان اورایران کے درمیان تجارتی حجم کو 40ملین ڈالر سے بڑھا کر 400ملین ڈالر تک لے جانے کی امید سے تہران پہنچے ہیں۔

مزید : صفحہ اول