وزارت داخلہ نے داعش کے ممکنہ خطرے سے نمٹنے کیلئے حکمت عملی ترتیب دیدی

وزارت داخلہ نے داعش کے ممکنہ خطرے سے نمٹنے کیلئے حکمت عملی ترتیب دیدی

 لاہور(شعیب بھٹی ) داعش کے بڑھتے ہوئے خطرے کے پیش نظر اس سے نمٹنے کے لئے وزارت داخلہ کی جانب نے نئی حکمت عملی ترتیب دے دی ۔اس ضمن میں تمام سیکیورٹی ایجنسیز کو مراسلہ جاری کیا گیا ہے کہ دولت اسلامیہ سے روابط بڑھانے والی شدت پسند تنظیموں پر کڑی نظر رکھی جائے تاکہ داعش کے بڑھتے ہوئے خطرے کے پیش نظر اس فتنے کوملک میں پرورش پانے سے روکاجاسکے اس سلسلے میں ایک الگ انٹیلی جنس یونٹ قائم کیاجائے جو بین الاقوامی انسداد دہشت گردی کے اداروں سے رابطے میں رہے۔ وزارت داخلہ کے ذرائع نے بتایا ہے کہ پاکستان میں داعش کے بڑھتے اسرورسوخ کوروکنے کے لئے نئی حکمت عملی تیار کرلی گئی ہے جس میں حساس اداروں سمیت دیگر سیکیورٹی ایجنسیز کو کہا گیا ہے کہ داعش کے ابھرتے ہوئے خطرے سے نمٹنے کے لیے خاطرخواہ اقدام کئے جائیں اوردولت اسلامیہ سے روابط بڑھانے والی شدت پسند تنظیموں پربھی کڑی نظررکھی جائے جبکہ اس ضمن میں امیگریشن حکام سے بھی کہا گیا ہے کہ پاکستان سے کوئی بھی داعش میں شریک ہونے کے لئے نہ جانے پائے۔ اس حوالے سے ایجنسیاں مذہبی گروپوں اورجماعتوں پرکڑی نظررکھے ۔ سٹیٹ بینک اوردیگر مالیاتی اداروں کوبھی سختی سے تاکید کردی گئی ہے کہ فنڈزٹرانسفرز پرخصوصی نگاہ رکھیں تاکہ وہ داعش تک نہ پہنچ پائیں۔ وزارت داخلہ

مزید : صفحہ آخر