ہماری 70فیصد سے زائد آبادی کا انحصار زراعت پر ہے،ایوب زرعی تحقیقاتی

ہماری 70فیصد سے زائد آبادی کا انحصار زراعت پر ہے،ایوب زرعی تحقیقاتی

فیصل آباد (آن لائن) ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آبادکے ڈائریکٹر شعبہ حشرات طارق نیاز نے کہا ہے کہ ہماری 70فیصد سے زائد آبادی کا انحصار زراعت پر ہے ۔کپاس کی فصل کا ہمارے ملک کی زراعت اور معیشت میں اہم کردارہے۔ کپاس کی بی ٹی اقسام متعارفہونے اور فصل کا دورانیہ بڑھنے سے جہاں ملکی پیداوار میں اضافہ ہوا وہاں دیگر مسائل جیسا کہ نقصان رساں کیڑوں کے دورانِ زندگی، انواع اور بقا کو بھی یکسر تبدیل کرکے رکھ دیا ہے۔ موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے کپاس پر رس چوسنے والے کیڑوں کے حملہ کا خطرہ پہلے سے کہیں زیادہ بڑھ گیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے فارمرز ڈے کے موقع پر کاشتکاروں اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کپاس کے کاشتکاروں کو آگاہ کیا کہ اگتی ہوئے کپاس پر ٹوکا، دیمک، تھرپس، سفید مکھی اور چست تیلہ حملہ آور ہوسکتے ہیں ۔ کاشتکار نقصان کی معاشی حالت پر پہنچنے والے کیڑوں کے تدارک کے لیے محکمہ زراعت کے مقامی عملہ کے مشورہ سے سفارش کردہ زہروں کا انتخاب کریں۔ اس کے علاوہ کپاس کی چھڑیاں زمین کے برابر کاٹیں اور گہراہل چلا کر مڈھوں کو تلف کریں۔

تاکہ پھوٹ پر سفید مکھی چست تیلہ اور تھرپس پرورش پا کر اگلی آنے والی فصل پر منتقل نہ ہوں ۔ کھالوں اور وٹوں کو جڑی بوٹیوں سے پاک رکھیں ۔ کپاس کی کاشت کے لیے صحت مند بیج کا انتخاب کریں اور بوائی سے قبل بیج کو محکمے کی سفارش کردہ زہر لگا کر کاشت کریں۔اس طرح کپاس کی فصل ابتدائی طورپر 30سے 40دن رس چوسنے والے کیڑوں کے حملہ سے محفوظ رہتی ہے۔

مزید : کامرس