ایل ڈی اے سکیموں میں پلاٹوں پر قبضے واگزارنہ ہو سکے ، اصل مالکان مایوس

ایل ڈی اے سکیموں میں پلاٹوں پر قبضے واگزارنہ ہو سکے ، اصل مالکان مایوس

 لاہور(اقبال بھٹی)لاہور ڈیویلپمنٹ اتھارٹی عر صہ درازسے اپنی رہائشی سکیموں میں قبضہ مافیا سے اربوں روپے کی اراضی واگزار نہ کروا سکی جس کی وجہ سے پلاٹوں کے مالکان مایوسی کا شکار ہو گئے جن سکیمو ں کے پلاٹوں پر قبضہ کیا گیا ہے ان میں گلبرگ، گارڈن ٹاؤن، اقبال ٹاؤن،گلشن راوی، ایم اے جوہر ٹاؤن،فیصل ٹاؤن ، قائد اعظم ٹاؤن (ٹاؤن شپ)ماڈل ٹاؤن ایکسٹینشن ،سمن �آباد، سبزازار،گجر پورہ اورایل ڈی اے ایونیو ون شامل ہیں۔ تفصیلات کے مطابق گلبرگ سکیم1950سے پہلے کی ہے اس میں گرو مانگٹ گاؤں کے مکینوں نے ایل ڈی اے کے درجنوں پلاٹوں پر قبضہ کیا اس کے علاوہ متعدد غیر قانونی کچی آبادیاں بھی ایل ڈی کے پلاٹوں پر بنائی گئی ہیں ، علامہ اقبال ٹاؤن میں بھی بھیکے وال گاؤں کے رہنے والوں نے 50سے زائد قیمتی پلاٹوں پر قبضہ کر رکھا ہے ،گلشن راوی میں ساندہ بھاتیاں کے رہائشیوں نے بھی بیسیوں قیمتی پلاٹوں پر قبضہ کیا ہوا ہے جوہر ٹاؤن میں سمسانی کھوئی، اجودھیاپور، جوگین پورہ اور فیروز والہ شامل ہیں ان گاؤں کے لوگوں نے توسینکڑوں پلاٹوں پر قبضہ کیا ہواہے سب سے زیادہ سمسانی کھوئی کے مکینوں نے ایم بلاک اور این بلاک کے آدھے پلاٹوں پر قبضہ کر رکھا ہے جبکہ اجودھیاپور کے رہنے والوں نے بھی بی ٹو اور بی تھری بلاک کے 50 سے زائد پلاٹوں پر قبضہ کیا ہوا ہے فیصل ٹاؤن کے بی بلاک میں موجود کوٹھے پنڈ کے رہائشی بھی اتھارٹی کے قیمتی50 سے زائد قیمتی پلاٹوں پر قابض ہیں اسی طرح ٹاؤن شپ میں موجود کیر کلاں گاؤں اور دوسری کئی آبادیوں کے رہنے والوں نے ایل ڈی اے کے قیمتی سینکڑوں پلاٹوں پر ناجائز قبضہ کیا ماڈل ٹاؤن ایکسٹینشن میں لیاقت آباد دھلہ کے مکینوں نے 50سے زیادہ اتھارٹی کے پلاٹوں پر قبضہ کیا ہے جبکہ گجرپورہ میں جانی پور ہ کے رہنے والوں نے اتھارٹی کے بیسیوں پلاٹوں پر قبضہ کیا ،سمن آبادسکیم میں پکی ٹھٹھی گاؤں کے لوگوں نے ایل ڈی اے کے درجنوں قیمتی پلاٹ اپنے قبضے میں کر رکھے ہیں جبکہ ایل ڈی اے ایونیو ون کے بی اور ایل بلاک پر اتھارٹی کے سینکڑوں پلاٹوں پر قابض ہیں بی بلاک پر بلال ٹاؤن جبکہ ایل بلاک پر سردار ٹاؤن بنا دیا گیا ہے جبکہ لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی اپنی اربوں روپے کی پراپرٹی قبضہ مافیا سے واپس نہیں لے سکی

مزید : میٹروپولیٹن 1