ٹیکس چوروں کو قانون کے شکنجے میں لایا جائے،ذکر اللہ مجاہد

ٹیکس چوروں کو قانون کے شکنجے میں لایا جائے،ذکر اللہ مجاہد

لاہور(پ ر)امیرجماعت اسلامی لاہور ذکراللہ مجاہد نے کہا ہے کہ آف شورکمپنیوں کے ذریعے اثاثے بنانے والے ٹیکس چوروں کو قانون کے شکنجے میں لایاجائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز مسلم ٹاؤن میں عوامی دھرنے کے حوالے سے منعقدہ ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اجلاس سے جماعت اسلامی کے رہنماحافظ سلمان بٹ، خالد بٹ، اسلم شاہین، احمد سلمان بلوچ اوردیگر نے خطاب کیا۔

انہوں نے کہا کہ ملک کا عام مڈل کلاس خاندان ماہانہ اپنی روزمرہ اشیاء کی خریداری پر 5100روپے کا ٹیکس اداکرتا ہے اور پانچ سالوں میں یہ رقم 310250روپے بنتی ہے اور حکمران اس ٹیکس کے بدلے میں اس خاندان کو کیاسہولیات دیتے ہیں؟انہوں نے کہا کہ حکمران خود ٹیکس کی ادائیگی سے بچنے کے لیے نت نئے طریقے ایجادکرتے ہیں اور یہ آف شورکمپنیاں منی لانڈرنگ اورکالادھن سفید کرنے کے لیے بنائی جاتی ہیں ان کمپنیوں کو بنانے والے وہ لوگ ہیں جن کے پاس چوری یاغیرقانونی ذرائع سے حاصل کیاہواپیسہ ہوتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان میں روزانہ اربوں روپے کی کرپشن ہورہی ہے ۔حافظ سلمان بٹ نے اجلاس خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وکی لیکس ،آف شورلیکس اورپانامہ لیکس زدہ حکمرانوں کی پاکستانی سیاست میں کوئی گنجائش نہیں ہے، پانامہ لیکس کے حوالے سے نام نہاد کمیشن کی تشکیل کو ہم مستردکرتے ہیں اورمطالبہ کرتے ہیں کہ سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کی سربراہی میں کمیشن تشکیل دیاجائے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1