دوکانیں رات 8بجے بند نہیں کریں گے ، تاجروں کا متفقہ فیصلہ

دوکانیں رات 8بجے بند نہیں کریں گے ، تاجروں کا متفقہ فیصلہ

 لاہور(کامرس رپورٹر)لاہور کی تاجر برادری نے بجلی کی بچت کے نام پر رات آٹھ بجے دکانیں ، مارکیٹیں ، بازار اور کاروباری مراکز بند کر نے کی حکو متی تجویز کو دیوانے کا خواب قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ مو جودہ حکو مت جہاں بنیادی مسائل حل کرنے میں ناکام ہوئی ہے وہیں بجلی کے حوالے سے بلندو بالا دعوے اور وعدے بھی کھوکھلے ثابت ہوئے ہیں اور توانائی کا بحران ختم کر نے کے لیے اربوں روپے کی سر مایہ کاری بھی ہوا کی نظر ہو گئی ہے ۔تاجر برادری کسی صورت رات آٹھ بجے اپنے کاروبار بند نہیں کرے گی اگر حکومت نے زبر دستی کرنے کی کو شش کی تو لاہور بھر کی مارکیٹوں میں تالہ بندی کر تے ہوئے سڑکوں پر نکل آئیں گے لہذا وفاقی و صو بائی حکو متیں ہوش کے ناخن لیں اور اپنی ناکامی پر پردہ ڈالنے کی بجائے ہنگامی بنیادوں پر بجلی کی پیداورا میں اضافے کے لیے بجلی پیدا کر نے والی کمپنیوں کو پٹرولیم مصنوعات کی فراہمی کر یں۔گزشتہ روز انجمن تاجران لاہور کا اجلاس صدر مجاہد مقصو د بٹ کی زیر صدارت ہوا جس میں لاہور کے تاجر نمائندوں سمیت مختلف مارکیٹوں کے صدور و سیکرٹریز صاحبان نے کثیر تعداد میں شر کت کی ۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ تاجر برداری اپنا معاشی قتل کسی صورت نہیں ہونے دے گی اور اگر حکو مت نے زبر دستی دکانیں بند کروائی تو اینٹ کا جواب پتھر سے دیں گے ۔ اجلاس میں تاجر رہنماء ایو ب بٹ ، شاہد بلال ، محمد صابر ملک ، شیخ فیاض ، ٹیپو بھولا بٹ ، مجاہد شکیل ، سعید مغل ، شیخ جاوید صدیق ، شیخ عباس ، شیخ چاند ، عمان بٹ ، حاجی ریاض محمو د ، انتظار حسین لو دھی ، محمد پرویز ، اطہر اقبال و دیگر نے شر کت کی ۔صدر لاہور مجاہد مقصو دبٹ نے کہا کہ وزیر مملکت پانی وبجلی عابد شیر علی نے گزشتہ روز لاہور میں ایک تقریب سے اجلاس کر تے ہوئے کہا کہ بجلی کی بچت کے لیے حکو مت کئی ایک اقدامات اٹھانے جارہی ہے جس میں مارکیٹیں اور بازار سر شام بند کی جائیں گی اور دکانیں بند نہ کر نے والے تاجروں کے ساتھ قانونی طریقہ سے نمٹا جائے گا ۔ انھوں نے کہا کہ تاجربرداری حکو متی ایلچی کے بیان کو مضحکہ خیز سمجھتی ہے کیو نکہ ماضی میں بھی حکو مت ایسی تجاویز دے کر بھی بجلی کی بچت کو پورا نہ کر پائی ۔ علاوہ ازیں گزشتہ روز لاہور ٹر یڈرز الائنس کا اجلاس زیر صدارت صدر صفدر بٹ ہوا ۔جس میں تاجر رہنماء یاسر بٹ ، ملک قاسم ، رانا اخلاق ، ہیروسمیت گلبرگ اور پوش علاقوں میں واقع تجارتی مراکز کے عہدیداران نے شر کت کی ۔صفدر علی بٹ نے رات آٹھ بجے دکانیں بند کرنے کے حکو متی فیصلے کو تاجروں کا معاشی قتل قرار دیتے ہوئے کہا کہ موسم گر ما میں نوے فیصد صارفین شام ڈھلنے کے بعد خریداری کی غرض سے مارکیٹوں کا رخ کر تے ہیں ۔حکومتی ناقص پالیسیوں کی بدولت پہلے ہی لو ڈشیڈنگ نے تاجروں کے کاروبار پر منفی اثرات مر تب کر رکھے ہیں ۔حکو مت تاجروں کے مسائل کو سمجھتے ہوئے ایسا حل نکالے جس سے تاجروں کے کاروبار متاثر نہ ہوں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1