بیٹے کی ولادت کی خوشی میں مٹھائی کھانیوالے 7افراد موت کے منہ میں چلے گئے

بیٹے کی ولادت کی خوشی میں مٹھائی کھانیوالے 7افراد موت کے منہ میں چلے گئے

فتح پور (سٹی رپورٹر ) بچے کی پیدائش کی خوشی میں مٹھائی کھانے سے ایک ہی گھر کے 5فرادسمیت7 افرادمو ت کی آغوش میں چلے گئے، تفصیل کے مطابق فتح پور کے نواحی گاؤں چک نمبر 105 ایم ایل میں عمر حیات قوم آرائیں کے بیٹے ارشاد نے اپنے بیٹے کی پیدا ئش کی خوشی میں نواحی اڈا 111موڑ ٹی ڈی اے سے مٹھائی بنوائی ، مٹھائی چک ہذا کے متعدد گھروں، دوست ،احباب میں تقسیم کی ، جس کے کھاتے ہی تمام افراد کی حالت غیر ہو گئی ، جن کو فوری طور ڈسٹرکٹ ہسپتال بعد ازاں نشتر ہسپتال ریفر کر دیا ، جہاں پرخضر حیات ، محمد رمضان عرف جانی، محمد عرفان ،شہباز،سکندر پسران عمر حیات ساکن 105 ایم ایل ،اور غفور ،امیر ساکن چک نمبر 109ٹی ڈی اے جو دونوں کزن تھے ان دونوں نے بھی اسی دکان سے مٹھائی لے کر کھائی تھی ،ساتوں افراد زہریلی مٹھائی کھانے سے موت کی آغوش میں چلے گئے ، جب کہ 30سے زائد افراد نشتر ہسپتال اور ڈسٹرکٹ میں زیر علاج ہیں،نشتر میں زیر علاج افراد کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے ،ساتوں افراد کی نماز جنازہ علیحدہ علیحدہ ادا کر دی گئیں ،نمازجنازہ ں میں سیاسی و سماجی شخصیات سمیت علاقہ کی کثیر تعداد نے شرکت کی زہریلی مٹھائی کھانے سے پانچ افراد کی ہلاکت اور درجنوں کی حالت غیر ہونے پر ای ڈی او ہیلتھ لیہ نے مذکورہ دکان پر محکمہ صحت کی ٹیم کے ہمراہ آئے اور موقع پر موجود مٹھائی اور دیگر اشیاء کے سیمپل لئے ، سیمپل لینے کے بعد دکان کو سیل کر دیا ، اس موقع پر انہوں نے کہا کہ سیمپل لے لئے ہیں اور دیگر شواہد اکھٹے کر رہے ہیں، قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی، متا ثرین کو ہر ممکن طبی امداد فراہم کی جا رہی ہے ، بعد ازاں متاثرہ خاندان کے عمر حیات کے گھر گئے اور ان سے بچوں کی اموات پر اظہار افسوس کیا اور ان کو ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی ۔ ایس ایچ او تھانہ فتح پور نے محکمہ صحت کی ٹیم کے ہمراہ زہریلی مٹھائی بنانے والے کی دکان کا معائنہ کیا اور موقع سے شواہد اکھٹے کئے ، اس موقع پر انہوں نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ دکاندار خالد محمود کو گرفتار کر لیا ہے ،اور اس کے خلاف محکمانہ کاروائی شروع کر دی ہے ، چک نمبر 105ایم ایل کا رہائشی عمر حیات جو ٹانگوں سے معذور ہے ، اور اس کے بیٹے محمد ارشاد کے ہاں بیٹے کی پیدائش کی خوشی میں مٹھائی کھانے سے اس کے اپنے تمام بیٹے جن میں محمد رمضان عرف جانی ، محمد عرفان ،محمد شہباز،خضر حیات،سکندر، خالق حقیقی سے جاملے جب کہ اس کے دیگرتین بیٹے شہزاد، محمد ارشاد ، اور شیر محمد نشتر ہسپتال میں زندگی و موت کی کشمکش میں ہیں،عمر حیات نے بتایا کہ میں خود ٹانگوں سے معذور ہوں اور میرے بچے ہی میرا سہارا تھے ،میں تو ان کے سہارے ہی جی رہا تھا ،اب تو کچھ رہی سہی کسر بھی دم توڑ گئی ہے ۔انہوں نے بتایا کہ ہماری اس دکاندار یا کسی اور سے کوئی دشمنی نہیں تھی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ اول