سپریم کورٹ کا فیصلہ تمام جماعتوں کو قبول کرنا چاہیے،راحیل شریف کو این او سی دے کر حکومت نے درست سمت قدم اٹھایا ہے:علامہ طاہر اشرفی

سپریم کورٹ کا فیصلہ تمام جماعتوں کو قبول کرنا چاہیے،راحیل شریف کو این او سی ...
سپریم کورٹ کا فیصلہ تمام جماعتوں کو قبول کرنا چاہیے،راحیل شریف کو این او سی دے کر حکومت نے درست سمت قدم اٹھایا ہے:علامہ طاہر اشرفی

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) سپریم کورٹ کا فیصلہ تمام جماعتوں کو قبول کرنا چاہیے ، فیصلہ سے ثابت ہوا کہ ملک میں کرپٹ عناسر کے خلاف احتساب کیلئے کوئی ضابطہ موجود ہی نہیں ، پارلیمنٹ میں موجود جماعتیں احتساب کے مکمل اور جامع نظام کو لانے کیلئے عملی اقدامات اٹھائیں۔ جنرل راحیل شریف کو این او سی دے کر حکومت نے درست سمت قدم اٹھایا ہے ۔

 پاکستان علماء کونسل کے مرکزی چیئرمین اور وفاق المساجد پاکستان کے صدر حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے جامعہ مسجد خلفاء راشدین میں علماء کنونشن سے خطاب کرتے کہا کہ ملک کا نظام کفر سے تو چل سکتا ہے ظلم سے نہیں ، حکمرانوں کو سیاسی اور مذہبی قائدین کو عوام کی فلاح کیلئے اقدامات کرنے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کا فیصلہ نہ کسی کی جیت ہے اور نہ ہی کسی کی ہار ، آئین پاکستان اور پاکستانی عوام کی جیت ہونی چاہیے ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کے استعفیٰ کا مطالبہ ابھی قبل از وقت ہے جب جے آئی ٹی تشکیل پا جائے گی تو پھر دیکھا جائے گا کہ حکومت اپنا دباؤ جے آئی ٹی پر کتنا اور کس طرح ڈالتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد تمام سیاسی و مذہبی جماعتوں کو جے آئی ٹی کی تفتیش کے مکمل ہونے کا انتظار کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں سیاسی افراتفری پھیلانے کی کوششیں ناکام ہوں گی ۔ پاکستان اس وقت مشکل ترین حالات میں ہے ، ان حالات میں پاکستانی قوم کو متحد ہونے کی ضرورت ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکومت کے جنرل راحیل شریف کے این او سی میں رکاوٹ نہ ڈال کر درست سمت قدم اٹھایا ہے ۔ جنرل راحیل شریف سعودی عرب کی فوج کے نہیں اڑتالیس اسلامی ممالک کی افواج کے سربراہ بننے جا رہے ہیں ، جو پاکستان کیلئے اعزاز کی بات ہے انہوں نے کہا کہ عالمی عسکری اسلامی اتحاد کو فرقہ واریت کا رنگ دینے والے مسلمانوں اور عالم اسلام کے خیر خواہ نہیں ہیں۔ اس موقع پر مولانا محمد اشفاق پتافی ، مولانا قاری عبد الحکیم ، مولانا محمد اسلم ، مولانا عبد القیوم ، مولانا اسلام الدین ، مولانا اسید الرحمن ، مولانا اسد اللہ فاروق ، مولانا زاہد نے بھی خطاب کیا۔

مزید :

لاہور -