وزیر اعظم صادق و امین نہیں رہے ،استعفیٰ دیں ،سندھ اسمبلی میں قرار داد یں منظور،پنجاب اسمبلی میں قرار داد جمع

وزیر اعظم صادق و امین نہیں رہے ،استعفیٰ دیں ،سندھ اسمبلی میں قرار داد یں ...

  

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)سندھ اسمبلی میں پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف کی جانب سے وزیر اعظم کیخلاف قراردادیں منظور کر لی گئیں۔ قائد حزب اختلاف خواجہ اظہار الحسن کو بات کرنے کا موقع نہ ملنے پر ایوان میں شور شرابا ، نثار کھوڑو کی جانب سے پی پی پی اور پی ٹی آئی کی پیش کی گئی مشترکہ قرار دادوں میں وزیر اعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا گیا۔ قرار داد وں میں کہا گیا ہے کہ دو ججز نے واضح کہا کہ وزیراعظم صادق اور امین نہیں ، وزیر اعظم کیسے ماتحت افسران کے سامنے پیش ہونگے۔ڈپٹی سپیکر شہلا رضا نے کہا کہ افسوس وزیر اعظم کو کبھی کٹہرے میں نہیں لایا گیا ،ثابت ہوگیا چور بہت طاقتور ہے جبکہ پاناما سکینڈل پر دنیا میں تین وزرائے اعظم کو ہٹنا پڑا۔ قبل ازیں ایوان میں خواجہ اظہار اور شہلا رضا کے درمیان تلخ کلامی ہوئی۔ خواجہ اظہار نے کہا یہ آپ کا گھر اور ڈرائنگ روم نہیں ، اس طرح کام نہیں چلے گا جس پر شہلا رضا نے جواب دیا کہ آپ کو بات کرنی ہے تو کریں ورنہ باہر جائیں۔ اس دوران ایوان میں شور شرابا شروع ہوگیا۔ڈپٹی سپیکر شہلا رضا نے کہا اپوزیشن میرے خلاف عدم اعتماد کی قرارداد لے آئے۔

سندھ اسمبلی

لاہور (اے این این )تحریک انصاف وزیراعظم کے استعفے پر ڈٹ گئی، پنجاب اسمبلی میں بھی قرارداد جمع کرادی، قرارداد عمران خان کی ہدایت پر اپوزیشن لیڈر میاں محمود الر شید نے جمع کرائی، قرارداد میں کہا گیا ہے کہ پانامہ پیپرز کیس میں سپریم کورٹ کے دوسینئرترین ججوں کے فیصلے کے مطابق میاں محمد نواز شریف صادق اور امین نہیں رہے اور عدالت عظمیٰ کی طرف سے دیئے گئے 10نکات پر جے آئی ٹی کی تحقیقاتی رپورٹ پر سپریم کورٹ کے فیصلے تک انصاف کے تقاضوں کو پورا کرنے کیلئے وزیراعظم اپنے عہدہ سے فی الفورمستعفی ہو جائیں۔ بعدازاں پنجاب اسمبلی میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے میاں محمود الر شید نے کہا کہ پانامہ پر عدالتی فیصلہ تسلیم کیا لیکن وزیراعظم کے استعفے تک جے آئی ٹی کو کام کرنے نہیں دیں گے۔

مزید :

صفحہ اول -