لشمینیہ کی بیماری سے متاثرہ28لوگ منظر عام پر آگئے

لشمینیہ کی بیماری سے متاثرہ28لوگ منظر عام پر آگئے

  

ٍہری پور (نامہ نگار)لشمینیہ کی بیماری سے متاثرہ28لوگ منظر عام پر آگئے ۔ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوٹر ہسپتال ہری پور میں اس سے متاثرہ 15 افراد کو گذشتہ روز انجکشن لگائے گئے ۔ اگر اس بیماری کا بروقت علاج نہ کیا جائے تو یہ کینسر کی صورت اختیار کر جاتی ہے ۔ اس وقت یہ دنیا کہ 88 مملک میں پائی جا تی ہے اور لاکھوں لوگ اس سے متاثر ہوچکے ہیں ۔ مذکورہ بیماری بلوچستان سے سی پ]یک منصوبے کی تکمیل میں استعمال کے لیئے لائی گئی ٹرانسپوٹ جو کےZK کمپنی کے ٹرکوں کے ذریعے ہری پور میں آئی ، اس وقت اس بیماری سے متاثرہ افراد موٹر وے قریبی علاقے ہیں ۔اس بیماری کی تشخیص ہوتے ہی محکمہ صحت کے افسران اور سٹاف نے صوبائی حکومت کی مدد سے اس سے بچاؤ اور مذید پھیلاؤ کے لئے خصوصی اقدامات کر رکھے ہیں ۔ ڈاکٹر زکیم خان ، تفصیلات کے مطابق ہری پور میں چند روز قبل تشخیص سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ ہری پور کی میں ببنے والی موٹر وے سے ملحقہ آبادی ایک مخصوص بیماری میں مبتلا ہو چکی ہے ۔ جس کے مریض دن بدن بڑتے جا رہے ہیں عام حالت میں ڈاکٹرز اسے الرجی یا جلدی امراض سمجھتے تھے مگر کوئی بھی دوائی اس پر اثر انداز نہیں ہو رہی تھی۔ تحقیق سے پتہ چلا کہ یہ بیماری ایک انتہائی چھوٹٰی سی مخصوص مکھی کے کاٹنے سے ایک چھوٹے سے دانے کے ذریعے پھیلتی ہے اور اس کے زخم بننے میں ایک سے دو ماہ کا عرصہ لگ جاتا ہے۔ جس سے شروع میں خارش وغیرہ ہوتی ہے ۔ ان خیالا ت کااظہار ایم ایس ڈی ایچ کیو ہری پور نے لشمینیہ کے حوالے سے خصوصی انٹر ویو کے دواران کیا ، انھوں نے بتایا کہ اس بیماری سے بچاؤ کے لیئے متاثرہ علاقوں میں ڈی ایچ او کے زیر نگرانی ٹٰیموں نے علاقے میں سپرے کے علاوہ متاثرہ علاقوں میں مخصوص قسم کی مچھر دانیاں بھی تقسیم کر دی ہیں اور اس حوالے سے 15 مریضوں کو انجکشن بھی لگائے گئے ہیں اس کے لیئے متاثرہ مریضوں کومسلسل 4 ہفتوں تک انجکشن لگوانے پڑیں گے جو کہ ڈی ایچ کیو ہسپتال سے بلکل فری لگائے جا رہیں ہیں ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -