لاہور کی ماڈل سڑک ’’مادر ملت روڈ‘‘ پر تجاوزات کی بھرمار، ٹی ایم او کی پراسرار خاموشی سے علاقہ مکین پریشان

لاہور کی ماڈل سڑک ’’مادر ملت روڈ‘‘ پر تجاوزات کی بھرمار، ٹی ایم او کی ...
لاہور کی ماڈل سڑک ’’مادر ملت روڈ‘‘ پر تجاوزات کی بھرمار، ٹی ایم او کی پراسرار خاموشی سے علاقہ مکین پریشان

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) اندھیر نگری چوپٹ راج کا جملہ تو بہت سنا گیا ہے لیکن اگر کسی نے اس کا عملی مظاہرہ دیکھنا ہو تو وزیر اعلیٰ کی ناک کے نیچے ٹاﺅن شپ لاہور چلا جائے جہاں خادم اعلیٰ کی جانب سے ماڈل سڑک قرار دی جانے والی ”مادر ملت روڈ“ پر تجاوزات کی ایسی بھرمار ہو گئی ہے کہ علاقہ مکینوں کا جینا محال ہو چکا ہے۔ایک ماڈل سڑک پر جگہ جگہ تجاوزات کی بھرمار ہے اور سروس لین پر ٹریفک کے گزرنے کے لئے جگہ بھی نہیں ہے۔

علاقہ مکینیوں کی جانب سے موصول ہونے والی شکایات میں مقامی لوگوں کا کہنا تھا کہ ٹاﺅن شپ لاہور کی سڑک مادر ملت روڈ کو چند سال قبل پہلے وزیر اعلیٰ پنجاب کی جانب سے ماڈل سڑک قرار دیا گیا تھا لیکن اسی سڑک پر پائپ سٹاپ سے پلی سٹاپ تک تجاوزات کی وہ بھرمار ہو گئی ہے کہ دیکھنے والوں کو سب حکومتی دعوے کھوکھلے نظر آنے لگتے ہیں۔ یہاں سروس روڈ پر جگہ جگہ جنریٹر اور ہیوی گاڑیوں کی مرمت کی دکانیں کھل چکی ہیں جن کے مالکان عین سڑک کے بیچ میں ہی کسی بھی گاڑی کو پارک کرکے مرمت کا کام شروع کردیتے ہیں جس کی وجہ سے راہگیروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے جبکہ ٹریفک جام ہونے کی وجہ سے بھی لوگوں کو پریشانی اٹھانا پڑتی ہے۔

علاقہ مکینوں رانا خاور، ساجد ارشاد، خرم انیس ، محمد آصف اور طارق محمود نے الزام عائد کیا ہے کہ مادر ملت روڈ ٹی ایم او نشتر ٹاﺅن علی عباس کے زیر اثر آتا ہے۔ ٹی ایم او کو بارہا تجاوزات کے خاتمے کیلئے درخواستیں دی گئی ہیں لیکن ٹاؤن آفسر کے کان پر جوں تک نہیں رینگتی۔ علاقہ مکینوں نے یہ بھی الزام عائد کیا کہ مذکورہ افسر کی آشیرباد سے ہی سروس روڈ پر جنریٹر، اور بڑی گاڑیوں کے کاریگروں نے بدمعاشی شروع کر رکھی ہے جبکہ ٹی ایم او ماہانہ نذرانہ وصول کرکے کسی بھی کارروائی سے گریزاں ہے۔علاقہ مکینوں کا کہنا تھا کہ ان بھاری گاڑیوں کی وجہ سے حادثات بھی ہوتے رہتے ہیں۔’’ہم نے ٹی ایم او کو بارہا اس بات سے آگاہ کیا ہے لیکن وہ بالکل بھی اس جانب توجہ نہیں دیتا،‘‘ پائپ سٹاپ کے رہائشی رانا خاور نے روزنامہ پاکستان کو بتایا۔انہوں نے کہا کہ اگر وزیر اعلیٰ کی ماڈل سڑک کا یہ حال ہے تو باقی جگہوں کا کیا حشر ہوگا؟ اگر وزیر اعلیٰ یہاں قانون کا نفاذ ممکن نہیں بنا سکتے تو پورے صوبے کے حالات کیسے سنبھالیں گے؟

علاقہ مکینوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فوری طور پر نااہل اور کرپٹ ٹی ایم او علی عباس کو معطل کرکے ماڈل روڈ کو تجاوزات سے پاک کروا کے حقیقی معنوں میں ماڈل سڑک بنانے کے احکامات جاری کریں بصورت دیگر ہم احتجاج پر مجبور ہوں گے۔

مزید : لاہور