26اپریل اسلامی تاریخ کا روشن ترین دن ہے،مولانا عزیز الرحمن ثانی

26اپریل اسلامی تاریخ کا روشن ترین دن ہے،مولانا عزیز الرحمن ثانی

لاہور(پ ر) عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی رہنماؤں نے ختم نبوت اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ 26اپریل 1984ء ہماری اسلامی اورملکی تاریخ کاوہ عظیم روشن ترین دن ہے کہ جس دن منکرین ختم نبوت قادیانی فتنہ کو اسلامی شعائر استعمال کرنے کوقانونی جرم قرار دیکرپابندی عائد کی گئی اس حوالے سے 26اپریل کو مختلف جماعتیں ملک بھر میں یوم نفاذ امتناع قادیانیت ایکٹ منائیں گی۔ 1974ء کوپارلیمنٹ سے قادیانی آئینی طور پرغیر مسلم اقلیت قرار دیے جانے کے باوجودبھی اسلامی شعائر استعمال کرتے تھے۔

اور قادیانی اسلام کا لبادہ اوڑھ کر اور اسلام کا جعلی ٹائٹل استعمال کرکے سادہ لوح مسلمانوں کو قادیانی کافر ومرتد بناتے تھے سابق صدر مملکت جنرل ضیاء الحق نے ایک صدارتی آرڈیننس کے ذریعے قادیانیوں کے اسلامی شعائر استعمال پر پابندی کیلئے امتناع قادیانیت ایکٹ جاری کیا جسے بعد پارلیمنٹ اور سینیٹ سے منظوری کے بعد 1973ء کے متفقہ اسلامی آئین کا حصہ بنا دیا گیااس ایکٹ سے قادیانیوں کاسلامی شعائر استعمال کرنا قانونی جرم قرار دیکر اسلام کے بنیادی عقیدہ ختم نبوت کو تحفظ ملا ۔عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی رہنما مولانا عزیزالرحمن ثانی،مولانا قاری علیم الدین شاکر، قاری جمیل الرحمن اختر ،مجلس لاہور کے مبلغ مولانا عبدالنعیم ،قاری محمداقبال،خطیب ختم نبوت مولانا علامہ محبوب الحسن طاہر،قاری ظہورالحق ،مولانا ظہیر احمد قمر،مولانا قاری عبدالعزیز،مولاناقاری محمدامین عاجز ، مولانا خالدمحمود ،مولانا سعید وقار ودیگر علماء کرام کا کہنا تھاکہ ختم نبوت دین کا اساسی اور بنیادی عقیدہ ہے ،ناموس رسالت کا قانون تمام انبیاء کرام کی عزت اور ناموس کی حفاظت کا دربان اور چوکیدار ہے ناموس رسالت قانون کیخلاف یہودی و قادیانی لابی سازشوں میں مصروف عمل ہے۔علماء نے کہا کہ قادیانی پارلیمنٹ کی قرارداداور اعلیٰ عدالتوں کے فیصلے کے مطابق دائرہ اسلام سے خارج اور غیرمسلم اقلیت ہیں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 4