سموگ کمیشن کو رپورٹ 9 جون کو پیش کرنے کا حکم

سموگ کمیشن کو رپورٹ 9 جون کو پیش کرنے کا حکم

لاہور(نامہ نگار)چیف جسٹس پاکستان مسٹرجسٹس ثاقب نثار نے سموگ کمیشن کو رپورٹ مرتب کر کے 9 جون کو پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ یہ آئندہ نسلوں کی صحت کا معاملہ ہے، اس میں تاخیر برداشت نہیں کی جائے گی۔چیف جسٹس ن کی سربراہی میں قائم سپریم کورٹ کے 2 رکنی بنچ نے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں اسموگ کے معاملے پر ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی،عدالت کا کہنا تھا کہ سموگ کے خلاف زیر التواء درخواستیں کمیشن رپورٹ کے بعد یکجا کرنے کاحکم دیں گے۔سماعت کے دوران درخواست گزار شیر از ذکا ء ، سموگ کمیشن کے چیئرمین ڈاکٹر پرویز حسن، محکمہ ماحولیات کے لاء افسران اور دیگر عہدیداران پیش ہوئے۔یا د رہے کہ درخواست گزار شیراز ذکا ء نے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی تھی جس میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ سموگ کے پھیلاؤسے انسانی صحت اور ماحول متاثر ہو رہا ہے، اس کی روک تھام کے لئے حکومت کو حکم جاری کیا جائے۔ اس پٹیشن پر سماعت کے بعد 14 نومبر 2017 ء کو لاہور ہائی کورٹ کے اْس وقت کے چیف جسٹس منصور علی شاہ نے پنجاب حکومت کو ہدایت کی تھی کہ وہ 3 ماہ کے اندر اسموگ کو کنٹرول کرنے کے حوالے سے پالیسی جمع کروائیں اور ایک سموگ کمیشن تشکیل دیں،بعدازاں چیف جسٹس پاکستان نے ازخود نوٹس لے کر ہائیکورٹ سے ریکارڈ طلب کیا تھا۔ فاضل بنچ نے حکم دیا ہے کہ سموگ کمیشن رپورٹ مرتب کرکے 9 جون کو عدالت میں پیش کی جائے۔

مزید : صفحہ آخر