نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا پولیس کانسٹیبل دم توڑ گیا

نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا پولیس کانسٹیبل دم توڑ گیا

حافظ آباد(ڈسٹرکٹ رپورٹر)حافظ آباد کے نواحی گاؤں ساگر کے قریب نامعلوم مسلح ملزمان کی فائرنگ سے شدید زخمی ہونے والا پولیس کانسٹیبل عمر عثمان تارڑ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہسپتال میں دم توڑ گیا۔ متوفی عمرعثمان تارڑ جوکہ تھانہ صدر حافظ آباد میں تعینات تھا۔ وہ گزشتہ رات دیگر پولیس ملازمین کے ہمراہ ساگر ہیڈ کے قریب گشت پر مامور تھا جہاں پولیس نے ایک مشکوک موٹر سائیکل کو روکنے کی کوشش کی تو مسلح ملزمان نے پولیس پر فائرنگ کردی جس کے نتیجہ میں کانسٹیبل عمر عثمان شدید زخمی ہوگیا اور اسے تشویشناک حالت میں لاہور ہسپتال ریفر کیا گیا جہاں وہ ذخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا۔ شہید پولیس کانسٹیبل کی نماز جنازہ پولیس لائنز حافظ آباد میں ادا کی گئی . جس میں آر۔پی۔او گوجرانوالہ راجہ رفعت مختار، ڈی۔پی۔او ڈاکٹر غیاث گل ، ڈی۔ایس۔پی صدر سرکل میاں توصیف، انچارج سی۔پی۔ایل۔سی رانا خالد محمود کے علاوہ افسران،جوانوں ، وکلاء، میڈیا کے نمائندوں، سول سوسائٹی، تاجربرادری اور تمام مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے افراد کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔آر پی او گوجرانوالہ راجہ رفعت کا کہنا تھا کہ فرض کی ادائیگی کیلئے جانوں کا نظرانہ پیش کرنے والے عمر عثمان جیسے بہادر سپوت ملک و قوم کے ہیرو ہیں۔ ڈی پی او حافظ آباد ڈاکٹر سردار غیاث گل نے شہید کے والد کو دلاسہ دیتے ہوئے کہا کہ شہید کے ملزمان کو جلد گرفتار کر کے کیفرکردار تک پہنچایا جائے گا۔بعد ازاں شہید عمر عثمان کو آبائی گاؤں بیری والا میں سرکاری اعزاز کے ساتھ سپردخاک کیا گیا۔ شہید نے سوگ و اران میں بوڑھے والدین کے علاوہ بیوہ اور دو بیٹیاں چھوڑی ہیں۔

مزید : صفحہ آخر