جاتی امرا: 70فیصد سے زائد سکیورٹی کیمرے ہٹادیئے گئے

جاتی امرا: 70فیصد سے زائد سکیورٹی کیمرے ہٹادیئے گئے
جاتی امرا: 70فیصد سے زائد سکیورٹی کیمرے ہٹادیئے گئے

  

لاہور (ویب ڈیسک )سپریم کورٹ کے احکامات پر سکیورٹی اہلکاروں کی واپسی کے بعدسابق وزیر اعظم نواز شریف کی رہائشگاہ جاتی امرا کامنظر ہی تبدیل ہو گیا ، چند افراد سکیورٹی پر موجود ہیں جبکہ 70فیصد سے زائد سکیورٹی کیمرے ہٹالیے گئے ہیں۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

روزنامہ دنیا کے مطابق جاتی امرا کے اطراف میں ڈیوٹی پر مامور اضافی اہلکار اپنے ساز و سامان کے ساتھ واپس لوٹ گئے جن میں 450 پولیس اہلکار اور 54 ایلیٹ فورس کے اہلکار شامل ہیں۔ تمام ٹریفک اہلکار بھی ہٹا دئیے گئے ، اب کوئی ٹریفک اہلکار ڈیوٹی نہیں دے سکتا۔ اس وقت جاتی امرا پر 20 پولیس اہلکار، ایلیٹ فورس کے 9جوان، 3 سے 5 افراد سپیشل برانچ کے موجود ہیں ۔

اخباری ذرائع کے مطابق رینجر ز کی کمپنیاں اور شریف فیملی کے پرائیوٹ اہلکار موجود ہیں۔ ایلیٹ فورس کے 9جوانوں میں سے دو اہلکار رکن قومی اسمبلی کیپٹن (ر) صفدر جبکہ چار اہلکار سابق وزیر اعظم نواز شریف اور مریم نواز کے ساتھ ڈیوٹی دیں گے ،20 پولیس اہلکار جاتی کے اندر اور باہر ڈیوٹی دیں گے۔

ترجمان شریف فیملی نے سکیورٹی ہٹانے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا اور کہا کہ نواز شریف ملک کے تین بار وزیر اعظم رہے ہیں،ان کی سکیورٹی کو اس طرح ہٹانا انتقامی کارروائی لگتی ہے نوازشریف 22 کروڑ عوام کے دلوں کی دکھڑکن ہیں ان کی جان کی حفاظت ضروری ہے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور