پسیکو، ریگی ماڈل ٹاؤن کو بلا تعطل بجلی کی فراہمی کو یقینی بنائے، سید ظفر علی شاہ

پسیکو، ریگی ماڈل ٹاؤن کو بلا تعطل بجلی کی فراہمی کو یقینی بنائے، سید ظفر علی ...

  

پشاور(سٹی رپورٹر)ڈائریکٹر جنرل پشاور ڈویلپمنٹ اتھارٹی سید ظفر علی شاہ نے پشاور الیکٹرک سپلائی کمپنی سے کہا ہے کہ وہ صوبائی دارالحکومت میں ریگی ماڈل ٹاؤن کو بلا تعطل بجلی کی فراہمی کو یقینی بنائے۔سید ظفر علی شاہ نے پیسکو چیف کے نام اپنے ایک خط میں کہا ہے کہ پیسکو ریگی ماڈل ٹاؤن میں چار گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کر رہا ہے حالانکہ ریگی ماڈل ٹاون سے بجلی کے بلوں کی وصولیابی 100 فیصد ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ بعض اوقات لائن فالٹ کے بہانے پیسکونے 10 سے 15 گھنٹوں تک بجلی کی فراہمی بھی بند کی ہے جس کی وجہ سے ریگی ماڈل ٹاؤن کے رہائشیوں کو ذہنی اذیت پہنچی۔ خط کے مطابق، PDA نے ریگی ماڈل ٹاؤن میں تمام بنیادی سہولیات کو یقینی بنانے کے لئے اقدامات اٹھائے تھے تاکہ 1996 میں الاٹ کیے گئے پلاٹوں میں سرکاری ملازمین اپنے مکانات تعمیر کرسکیں۔ ظفر علی شاہ نے کہا کہ پی ڈی اے نے پیسکو کو 2 کروڑ 80 لاکھ روپے سے زائد کی ادائیگی کی، لیکن بجلی کمپنی غیر معیاری آلات استعمال کرتی ہے جس کی وجہ سے ریگی ماڈل ٹاؤن کو بجلی معطل کردی گئی۔ انہوں نے شکایت کی کہ بارش ہونے پر 10 سے 15 گھنٹے تک شہر میں بجلی کی فراہمی معطل رہی۔ ڈی جی پی ڈی اے نے بتایا کہ ریگی ماڈل ٹاؤن کے 400 کے قریب رہائشیوں کو ناقص معیار کے آلات کے استعمال کی وجہ سے بار بار بجلی کی معطلی کی وجہ سے پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ خط میں کہا گیا ہے کہ سن 2010 میں اس وقت کے قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین کی زیرصدارت اجلاس میں ریگی ماڈل ٹاؤن میں ایک گرڈ اسٹیشن قائم کرنے کا فیصل کیا گیا تھا، گرڈ اسٹیشن کی عمارت تیار ہونے کے باوجود گرڈ کو بجلی کی فراہمی نہیں کی گئی۔ خط کے مطابق، پیسکو نے پہلے ہی گرڈ اسٹیشن کے قیام کے لئے 1 کروڑ 90 لاکھ روپے سے زیادہ، مانیٹرنگ سسٹم کے لئے 20 ملین سے زائد اور بجلی کے ٹرانسفارمروں کی تنصیب کے لئے 20 ملین سے زائد رقم وصول کی ہے۔ خط میں مزید کہا گیا ہے کہ پیسکو کو ریگی ماڈل ٹاؤن کے لئے ایک الگ فیڈر قائم کرنے کے لئے 30 ملین روپے سے زیادہ وصول ہوئے۔ لیکن اس کے باوجود بھی ریگی ماڈل ٹاون کے مکینوں کے لئے بجلی سپلائی کی صورتحال میں کوئی بہتری نہیں آئی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -