صوابی،قتل میں ملوث قاتل 24 گھنٹوں کے اندر خاتون سمیت گرفتار

صوابی،قتل میں ملوث قاتل 24 گھنٹوں کے اندر خاتون سمیت گرفتار

  

صوابی (بیورورپورٹ) یار حسین ضلع صوابی کی پولیس نے چوبیس گھنٹے کے اندر اندر قتل کے کیس کو ٹریس کر کے خاتون سمیت دو ملزمان کو گرفتار کر لیا۔ قاتلان مقتول کی بیوی اور چچا زاد بھائی نکلے ملزمان کے قبضے سے آلہ قتل پستول اور چوری شدہ سامان بھی بر آمد کر لیا گیا ڈی پی او آفس سے جاری پریس ریلیز کے مطابق مدعی مسماۃ ح سکنہ کوٹھے نظر بانڈہ نے تھانہ یارحسین میں رپورٹ درج کرتے ہوئے کہا کہ انکے بیٹے مقتول فائید علی بیوی کے ہمراہ اپنے کمرے میں موجود تھے کہ درمیانی شب فائرنگ کی آواز سنائی گئی،اور ملزمان نے میرے کمرے کا دروازہ باہر کی طرف سے لاک کیا تھا بذریعہ کھڑکی باہر گیا اور دیکھا تو دوسرے کمرے میں بیٹا فائید علی خون میں لت پت پڑے تھے۔اس واقع پر ڈی پی او صوابی نے سختی سے نوٹس لیتے ہوئے ڈی ایس پی لاہور تاج محمد خان کی قیادت میں ایک ٹیم تشکیل دی،تشکیل شدہ ٹیم ایس ایچ او یارحسین سب انسپکٹر شہزاد خان،تفتیشی آفیسر انسپکٹر جواد خان،اے ایس آئی فضل مالک خان نے نامعلوم قاتلان کا سراغ لگانے کی خاطر نہایت باریک بینی کے ساتھ تفتیش شروع کرتے ہوئے مقتول کی بیوی مسماۃ(م) کو شک کے بناء پر حراست میں لیکر بذریعہ لیڈی کنسٹبل تفتیش کے دوران مسماۃ (م) نے حقیقت سے پردہ اُٹھاتے ہوئے راز اگل دئیے دوران تفتیش مسماۃ نے کہا کہ ہم نے راستے سے ھٹانے کی خاطر خاوند فائیدعلی کو قتل کرکے بعد میں گھر والوں سے کہا کہ چوروں نے 1.05تولے زیوارات چوری بھی کیا اور مزاحمت پر خاوند پر فائرنگ کرکے قتل کیا۔مگر پولیس ٹیم نے جدید پیشہ وارانہ پولیسنگ کی بدولت سارے راز پاش کر دئیے،دوران تفتیش گرفتار شدہ ملزمان سے آلہ قتل پستول اور چوری شدہ زیوارات بھی برآمد کیے گئے، ملزم قیوم خان مقتول کے چچا زاد بھی ہے۔مزید تفتیش جاری ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -