برطانوی برینٹ آئل کی قیمت میں بڑی کمی، دنیا بھر کی سٹاک مارکیٹیں متاثر، پاکستان سٹاک مارکیٹ شدید مندی کاشکار، انڈیکس میں 1076.82پوائنٹس کمی، ڈالر 2روپے سستا

  برطانوی برینٹ آئل کی قیمت میں بڑی کمی، دنیا بھر کی سٹاک مارکیٹیں متاثر، ...

  

واشنگٹن،لندن (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) امریکی خام تیل کے بعد برطانوی برینٹ آئل بھی 18 برس کی کم ترین سطح پر پہنچ گیا۔ پیر کے روز امریکی خام تیل کی قیمت دھڑام سے نیچے آ گری تھی جس کے بعد امریکی خام تیل کی قیمت 1983 تاریخ کی کمتریں سطح پر پہنچ گئی تھی اور امریکی خام تیل کی قیمت منفی37ڈالر تک پہنچ۔ اس دوران متعدد کمپنیاں پیسے دینے کے لیے تیار تھی تاہم کوئی بھی تیل خریدنا نہیں چاہ رہا تھا۔خبر رساں ادارے کے مطابق منگل کے روز ایشیائی مارکیٹ کھلنے کے بعد امریکی خان تیل کی قیمت میں کچھ ااضافہ ہوا قیمت میں 38ڈالر فی بیرل اضافے کے بعد قیمت اب فی بیرل بڑھ کر ایک ڈالر 55 سینٹ تک پہنچ گئی۔برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی خام تیل کے بعد برطانوی برینٹ آئل کی قیمت بھی 18 برس کی کم ترین سطح پر پہنچ گئی، عالمی مندی میں برینٹ آئل کی قیمت 18.1 ڈالر فی بیرل پر آگئی۔ لندن مارکیٹ میں برینٹ آئل کی قمیت میں اتار چڑھاؤ جاری رہا۔دریں اثناء سعودی عرب نے تیل کی قیمتوں میں استحکام کے لیے مزید اقدامات کا عندیہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ تیل کی قیمتوں پر گہری نظر ہے، ضرورت پڑنے پر کوئی بھی قدم اٹھانے کے لیے تیار ہیں۔۔ایشیائی ٹریڈنگ میں عالمی گیس کی قیمت کو ایک ڈالر 92 سینٹس کی سطح پر مستحکم دیکھا گیا جب کہ عالمی منڈی میں ریفائنڈ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں ایک سے 3 فیصد کمی کیساتھ مستحکم ہیں۔امریکی آئل مارکیٹ کریش ہونے کے بعد دنیا بھر کی سٹاک مارکیٹس میں آئل کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں بھی بڑے پیمانے پر کمی آئی کوئی ان کمپنیوں کے حصس خرینے کو تیار نہیں تھا، جس کے باعث تمام سٹاک مارکیٹیں بھی شدید مندی کا شکا ہو گئیں امرکی سٹاک مارکیٹ ایک ہی دن 600پوائنٹس گر گئی،جبکہ نیویارک سٹاک مارکیٹ بھی مندے کا شکار ہوگئی اور اس کے انڈیکس میں 2فیصد کمی دیکھنے مین آئی،لندن اور ٹوکیو سٹاک مارکیٹ بھی مندے کا شکار ہوئیں

برینٹ آئل

کراچی (اکنامک رپورٹر) عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں بدترین گراوٹ کے باعث پاکستان سٹاک ایکس چینج میں منگل کو شدید مندی کا رجحان دیکھنے میں آیا اور غیر ملکی ومقامی سرمایہ کاروں کی جانب سے تیل وگیس شعبے کے شیئرز کی فروخت کے دباؤ کی وجہ سے کے ایس ای100انڈیکس33ہزار کی نفسیاتی حد سے گرگیا اور انڈیکس 1076.82پوائنٹس کی کمی سے32422.83پوائنٹس کی سطح پر آگیا جب کہ 76.10فی صد کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈکی گئی جس کے نتیجے میں سرمایہ کاروں کو ایک کھرب 56ارب 35کروڑ86لاکھ روپے کانقصان اٹھانا پڑا۔اور کاروباری حجم بھی پیر کے مقابلے میں 15.19فی صد کم رہا۔گزشتہ روز ٹریڈنگ کا آغاز منفی زون میں ہوا اور عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں بحرانی کیفیت اور اس کے نتیجے میں عالمی اسٹاک مارکیٹوں میں مندی کے اثرات کو دیکھتے ہوئے پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں بھی مارکیٹ سے سرمایہ نکالنے کا دباؤ دیکھنے میں آیا جس کے باعث ٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس ای100انڈیکس 32296پوائنٹس کی نچلی سطح پر آگیا بعد ازاں ریکوری آنے سے 32300اور32400کی نفسیاتی حد یں بحال ہوگئیں لیکن مندی کا رجحان غالب رہا اور مارکیٹ کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس 1076.82پوائنٹس کی کمی سے32422.83پوائنٹس پر بند ہوا۔اسی طرح کے ایس ای30انڈیکس بھی578.44پوائنٹس کی کمی سے 14233.23پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس583.26پوائنٹس کی کمی سے22881.87پوائنٹس پر بند ہوا۔گزشتہ روز مجموعی طور پر339کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا جن میں سے70کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ258کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں کمی اور11کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا،بیشتر کمپنیوں کے شیئرز کی قیمتوں میں کمی آنے کے باعث مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت ایک کھرب 56ارب 35کروڑ86لاکھ روپے کی کمی سے61کھرب3ارب76کروڑ95لاکھ روپے ہوگئی۔منگل کوحصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم بھی33کروڑ91لاکھ54ہزار شیئرز رہا جو پیر کے مقابلے میں 6کروڑ75لاکھ2ہزارشیئرز کم ہے۔قیمتوں میں اتارچڑھاؤ کے لحاظ سے فلپ موریس کے حصص کی قیمت145.48روپے کے اضافے سے2086.99روپے اورپاک ٹوبیکو کے حصص کی قیمت 39.99روپے کے اضافے سے1649.80روپے ہوگئی جب کہ نمایاں کمی کے لحاظ سے یونی لیور فوڈزکے حصص قیمت 570روپے کمی سے7030روپے اوررفحان میظ کے حصص کی قیمت334.43روپے کمی سے6535.57روپے ہوگئی۔نمایاں کاروباری سرگرمیوں کے لحاظ سے میپل لیف، فوجی سیمنٹ،ہیسکول پٹرو ل،ڈی جی خان سیمنٹ،پایونیئر سیمنٹ،چراٹ سیمنٹ یونٹی فوڈز،کے الیکٹر ک، اینگرو فرٹیلائزراورہم نیٹ ورک کے شیئرز سرفہرست رہے۔دریں اثنا سونے کی فی تولہ قیمت مزید1600روپے کی کمی سے94ہزار700روپے کی سطح پر آ گئی۔آل کراچی صراف اینڈ جیولر ز ایسوسی ایشن کے مطابق منگل کو عالمی مارکیٹ میں فی اونس قیمت16ڈالرکی نمایاں کمی سے 1666ڈالر ہوگئی جس کے باعث مقامی طور پر فی تولہ سونے کی قیمت 1600روپے کی کمی سے 94700روپے اور10گرام سونے کی قیمت1372روپے کی کمی سے81190روپے ہوگئی جب کہ چاندی کی فی تولہ قیمت10روپے کی کمی سے940روپے ہوگئی۔واضح رہے کہ لاک ڈاون کے باعث مقامی بلین مارکیٹ اور صرافہ مارکیٹیں بند ہیں۔مقامی کرنسی مارکیٹوں میں منگل کو پاکستانی روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالر کی قدر میں نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی اور انٹر بینک میں 1.50روپے جب کہ اوپن مارکیٹ میں 2روپے کی کمی سے ڈالر161.50روپے کی سطح پر آگیا۔ فاریکس ایسوسی ایشن آف پاکستان کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ روز انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت خرید1.50روپے کی کمی سے163روپے سے گھٹ کر161.50روپے اور قیمت فروخت1.70روپے کی کمی سے163.50روپے سے گھٹ کر161.80روپے ہوگئی جب کہ اوپن کرنسی مارکیٹ میں روپے کے مقابلے ڈالر کی قیمت خرید2روپے کی کمی سے162.50روپے سے گھٹ کر160.50روپے اور قیمت فروخت163.50روپے سے گھٹ کر161.50روپے ہوگئی۔ دیگر کرنسیوں میں یوروکی قیمت خرید170روپے سے گھٹ کر169روپے اور قیمت فروخت172روپے سے گھٹ کر171روپے ہوگئی جبکہ برطانوی پونڈ کی قیمت خرید196روپے سے گھٹ کر191 اور قیمت فروخت198روپے سے گھٹ کر193روپے ہوگئی۔سعودی ریال کی قیمت خرید41روپے سے گھٹ کر40.40روپے اور قیمت فروخت 41.50روپے سے گھٹ کر40.80روپے ہوگئی جب کہ یواے ای درہم کی قیمت خرید42.50روپے سے گھٹ کر41.50روپے اور قیمت فروخت 43روپے سے گھٹ کر42روپے ہوگئی۔

پاکستان سٹاک مارکیٹ

مزید :

صفحہ اول -