کرونا وائرس سے مرنے والوں کیلئے شہدا کی طرح کافنڈز مختص کرنے کی تجویز پیش

    کرونا وائرس سے مرنے والوں کیلئے شہدا کی طرح کافنڈز مختص کرنے کی تجویز پیش

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) گور نرسٹیٹ بینک رضا باقر نے کہا ہے کہ قرضوں پر سود کی ادائیگی میں مہلت دی گئی ہے،جو کمپنیاں اپنے ملازمین کو نوکری سے فارغ نہیں کریں گی ان کیلئے پانچ فیصد تک شرح سود پر قرض کی سکیم ہے،پندرہ دنوں میں کمپنی کو قرض ادا کیا جاتا ہے،اگر کسی کمپنی کو قرض نہیں مل رہا تو سٹیٹ بنک سے رجوع کیا جا سکتا ہے، اگر حکومت چاہے تو سود ادائیگی کو معاف کر سکتی ہے،ایسی صورت میں حکومت کو سبسڈی دینا پڑیگی جبکہ قائمہ کمیٹی نے تجویز پیش کی ہے کہ کرونا وائرس سے مرنے والوں کے لیے شہدا کی طرح کا فنڈز مختص جانا چاہیے جس پر سیکرٹری خزانہ نے کہاہے کہ یہ تجویز انتہائی اہم ہے اور اس پر غور کر رہے ہیں جی 20 ممالک سے ملنے والا ریلیف حتمی مراحل میں ہے، دو طرفہ معاہدوں میں بھی پاکستان کو ریلیف ملے گا۔ فیض اللہ کموکا کی زیر صدارت قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی خزانہ کا اجلاس ہوا جس میں گورنر سٹیٹ بنک رضا باقر نے ویڈیو لنک کے ذریعے اقدامات پر بریفنگ دی۔ گور نر سٹیٹ بینک نے کہاکہ کورونا وائرس کے پیش نظر سٹیٹ بنک نے معاشی صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے ریلیف دیا،گزشتہ دو ہفتوں میں ایک کھرب روپے کے قرضوں کی مدت بڑھائی گئی۔گورنر سٹیٹ بنک نے کہاکہ قرضوں پر سود کی ادائیگی میں بھی مہلت دی گئی،جو کمپنیاں اپنے ملازمین کو نوکری سے فارغ نہیں کریں گی ان کے لئے پانچ فیصد تک شرح سود پر قرض کی سکیم ہے۔ انہوں نے کہاکہ پندرہ دنوں میں کمپنی کو قرض ادا کیا جاتا ہے،اگر کسی کمپنی کو قرض نہیں مل رہا تو سٹیٹ بنک سے رجوع کیا جا سکتا ہے۔رضا باقر نے کہاکہ شرح سود میں 4.25 پوائنٹس کی کمی کی گئی ہے،دنیا میں سب سے زیادہ شرح سود پاکستان میں کم کی گئیجبکہ مختلف دیگر اقدامات بھی زیر غور ہیں۔ سیکرٹری خزانہ نے کہا کہ ریلیف پیکیج کو کابینہ اور ای سی سی میں پیش کیا گیا ہے جبکہ وزیر اعظم ریلیف پیکیج کو جلد ہی پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا۔ایف بی آر حکام نے بریفنگ دیتے ہوئے کہاکہ رواں مالی سال کے دوران170 ارب روپے کے ریفنڈز ادا کیے گئے،رواں ماہ8 ارب روپے کے مزید ریفنڈز ادا کیے جائیں گے،30 ارب سیلز ٹیکس اور 15 ارب ڈیوٹی ڈرا بیک کی مد میں دیے گئے۔

تجویز پیش

مزید :

صفحہ اول -