مداخلت: ڈی پی او مظفرگڑھ کیخلاف پنجاب اسمبلی میں تحریک استحقاق جمع

  مداخلت: ڈی پی او مظفرگڑھ کیخلاف پنجاب اسمبلی میں تحریک استحقاق جمع

  

مظفرگڑھ(نامہ نگار)ڈسٹرکٹ پولیس افیسر مظفرگڑھ سید ندیم عباس,ڈی ایس پی جتوئی اور ایس ایچ او جتوئی کے خلاف مظفرگڑھ کے حلقہ پی پی 275 تحصیل جتوئی سے تحریک انصاف کے ممبر صوبائی اسمبلی و مشیر وزیراعلی پنجاب سردار خرم سھیل لغاری نے فون کال اٹینڈ نہ کرنے,ترقیاتی کاموں میں مداخلت پر پنجاب اسمبلی میں تحریک استحقاق جمع کروادی, تحریک میں (بقیہ نمبر57صفحہ6پر)

کہا گیا ہے کہ ڈی پی او مظفرگڑھ ندیم عباس کو جب بھی انہوں نے فون کال کی انہوں نے ریسیو کی اور نہ ہی کال بیک کرنے کی زحمت کی, جبکہ وہ ان کو لاء اینڈ آرڈر کی صورت حال سے متعلقہ کسی بھی اجلاس میں بھی نہیں بلاتے. اسی طرح ان کے حکم پر ڈی ایس پی جتوئی ملازم حسین اور ایس ایچ او تھانہ جتوئی غلام مجتبی نے ان کے حلقہ پی پی 275 میں ہونے والی ترقیاتی سکیموں کے ٹینڈرز کے موقع پر بے جا مداخلت کی, لوگوں کو مارا پیٹا اور مقدمات درج کر دئیے.اس بارے انہوں نے ڈی پی او سے بارہا رابطہ کی کوشش کی لیکن انہوں نے کوئی رابطہ نہ کیا نہ فون کال اٹینڈ کی اور نہ ہی واپسی کال کی. جتوئی پولیس کی تمام تر کارروائی میں ڈی پی او کی مکمل اشیرباد حاصل ہے, سردار خرم لغاری نے تحریک استحقاق میں مزید کہا کہ جب انہوں نے ایس ایچ او سے اس بارے پوچھا تو اس نے جواب دیا کہ یہ ڈی پی او کا حکم ہے آپ سے جو ہو سکتا ہے کر لو.اس طرح جملہ افسران نے میرا اور اس ایوان کا استحقاق مجروع کیا ہے.ضابطہ کے مطابق کارروائی کی جائے.

جمع

مزید :

ملتان صفحہ آخر -