کروناوائرس کیخلاف جنگ، حکومت سب کو ساتھ لیکرچلے، یوسف رضاگیلانی

  کروناوائرس کیخلاف جنگ، حکومت سب کو ساتھ لیکرچلے، یوسف رضاگیلانی

  

ملتان(نمائندہ خصوصی)سابق وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی کا کہنا ہے آپس میں لڑنے کے بجائے کورونا سے لڑنا چاہیے۔ یہ سیاست کا وقت نہیں۔حکومت کا کام ھوتا ھے سب کو ساتھ لیکر چلے۔ حکومت چاھے تو پٹرولیم مصنوعات میں عوام کو بڑا ریلیف دے سکتی ھے۔ پٹرول کی قیمت میں کمی کا فائدہ پاکستانی عوام کو بھی ملنا چاہیے، ہم بغیر کسی تشہر کے عوام کو امداد فراہم کررھے ھیں، سید یوسف رضا گیلانی کا مزید کہنا تھا کہ میڈیا اس وقت مشکل حالات میں دشمنیاں پال کر(بقیہ نمبر30صفحہ6پر)

مسائل کو اجاگر کر رہا ہے،،حکومت کو چاہیے کہ سب پارٹیوں کو ساتھ لے کر چلے۔ پیپلز پارٹی نے فوکس صرف زراعت پر رکھا جس کی وجہ سے کسان خوشحال ہوا،، بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کا نام بدل دینے سے پروگرام کی اہمیت کم نہیں ہو گی، نیب سمیت ہر ادارے کو اپنے قانونی دائرہ کار میں رہتے ہوتے کام کرنا ہوگا، موجودہ حالات کے پیش نظر کوئی سیاسی گیم نہیں چاہتے، اور حکومت کو چاہیے کہ تمام صوبوں سمیت تمام جماعتوں وطبقات کو بھی ساتھ لیکر چلے۔ اپنی رھایش گاہ پر پریس کانفرنس کرتے ہوئیسابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ کورونا وائرس گلوبلی وبا کی صورتحال اختیار کر گئی ہے۔بعض لوگ اپنے طور پر والنٹیئر کام کر رہے ہیں ان کو خراج پیش کرتا ہوں۔ پیپلز پارٹی کے کارکنان ہراول دستے بنیں اور اس وبائی صورتحال میں مستحق افراد کی دل کھول کر مدد کریں۔ انہوں نے کہا کہ مجھے معلوم ہوا کہ فیصل ایدھی بھی کورونا وائرس میں مبتلا ہوگئے ہیں میں ان کیلئے دعا گو ہوں اور ان کیلئے ہم فکر مند ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ڈاکٹرز، نرسز اور پیرا میڈیکل اسٹاف جو فرنٹ لائن سولجرز ہیں ان کو سلام پیش کرتا ہوں۔ سابق وزیراعظم نے کہا کہ سید مراد علی شاہ کی کوششوں کو بھی خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ انہوں نے کہا متفقہ وزیراعظم رہا ہوں اور اپنے دور میں جتنی بھی کامیابیاں حاصل کیں وہ تمام سیاسی جماعتوں کے ساتھ ملکر، پوری قوم کے ساتھ ملکر مشکلات کا مقابلہ کیا ہے۔ ہم نے اس وقت زراعت میں انقلاب لیکر آئے۔ گندم اور چاول اور چینی اور کاٹن کوایکسپورٹ کیا۔ پاکستان اس وقت مستحکم ہوگیا اور کاشتکار خوشحال ہوگیا تھا۔ ہم نے ری کنسٹرکشن کا بھی ملک بھر میں کام کیا اور کوارڈینیشن کے ساتھ کیا۔ حکومت سے مطالبہ کرتا ہوں کہ تمام صوبوں کو ساتھ لیکر چلیں اس سے کم وبا کا مقابلہ خوش اسلوبی سے کر سکتے ہیں۔ ڈاکٹروں نے مردانہ وار بغیر حفاظتی سامان کے کورونا کا مقابلہ کیا ہے۔ ہم نے نشتر ہسپتال، طیب رجب اردوگان ہسپتال میں حفاظتی سامان بھی تقسیم کیا سید یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ میڈیا اراکین کو بھی خراج پیش کرتے ہیں جو اس مشکل وقت میں زمہ داریاں ادا کر رہیہیں۔ حکومت سے مطالبہ کرتا ہوں کہ بیرون ممالک پھنسے پاکستانیوں کو ملک میں لانے کیلئے اقدامات کیے جائیں۔ ہم حکومت پر تنقید نہیں کرتے اور نہ ہی سیاست کرنا چاہتے ہیں۔ جب الیکشن آئے گے تو تب لڑلیں گے ابھی کورونا سے لڑنا ہے۔ پیپلز پارٹی کے کارکنوں سے اپیل کروں گا کہ متاثرہ افراد کی مدد کریں اور اس کی تشہیر نہیں ہونی چاہیے یہ پارٹی کی پالیسی ہے۔ایک سوال کے جواب میں سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کو دنیا بھر میں سراہا گیا۔ دیگر ممالک کے لوگ مجھ سے بریفنگ لیتے تھے کہ یہ پروگرام کیسے کامیاب ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ تمام ادارے اپنی حدود میں رہ کر کام کریں گے تو کوئی مسلۂ نہیں ہوگا۔ میں نے وزیراعظم بننے کے بعد سب سے پہلے نیب جو میرے انڈر تھا کو آزاد کرتے ہوئے وزیر قانون کے تحت کردیا۔ انہوں نے کہا کہ نیب کو متنازعہ ادارہ نہ بنایا جائے ورنہ مسائل پیدا ہونگے۔ آٹا اور چینی سکینڈل پر بات کرتے ہوئے کہا کہ سکینڈل کی مکمل رپورٹ آنے پر پیپلز پارٹی موقف پیش کرے گی۔ اتحادی حکومت بنا کر ایک پالیسی پیش کرکے ک چلانے کی مثال پیش کی۔ ہم نے برے زمانے میں بھی عوام پر بوجھ نہیں ڈالا۔ مشکل ترین حالات میں عوام کو آسان ترین حالات پیش کر کے دئے۔ مجھے آج بھی 2010 کا سیلاب یاد ہے جب میڈیا نے میرے ساتھ دیا اور پاک فوج کے ذریعے امداد بھی تقسیم کروائی۔

یوسف رضا

مزید :

ملتان صفحہ آخر -